اسلام آباد نمل یونیورسٹی کےباہر طلباء تصادم، طالبعلم جاں بحق

ملزمان کی گرفتاری کیلئے پولیس کے چھاپے

NUML Student Clash Isb Vo

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/03/Numal-Student-Clash-Isb-Vo.mp4"][/video]

اسلام آباد میں نمل یونیورسٹی کے باہر 2 طلبہ گروپوں میں تصادم کے باعث ایک طالب علم جاں بحق اور چار زخمی ہوگئے۔

پولیس کے مطابق مقتول طالب علم عبدالحق کی موت پیٹ میں تیز دھار آلہ لگنے کے باعث ہوئی۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ واقعہ کی تفتیش کی جا رہی ہے اور ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے بھی مارے جا رہے ہیں۔ جاں بحق ہونے والے طالب علم عبدالحق کا تعلق خیبر پختونخوا کے شہر کرک سے ہے۔

پولیس نے مقتول کے اہلخانہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا ہے جبکہ زخمی ہونے والے طلباء میں خیبر شاہ، رشید خان، اصغر اور احتشام الحق شامل ہیں۔

آئی جی اسلام آباد قاضی جمیل الرحمان نے واقعے کا نوٹس لے کر ایس ایس پی آپریشنز کو تمام ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم دیا ہے۔

دوسری جانب نمل یونیورسٹی جھڑپ کے بعد طلباء تنظیم کی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ نمل یونیورسٹی میں لسانی گروپوں کی جھڑپ میں یہ واقعہ پیش آیا، گزشتہ چند سالوں سے کچھ گروہ لسانیات کا جھانسا دے کر طلباء کو استعمال کر رہے ہیں۔

ناظم اسلامی جمیت طلبہ دانیال عبداللہ نے کہا کہ کل رات کو بھی انہی کونسل کے ہاتھوں طالب علم کو بے دردری سے قتل کیا گیا۔ ہم بار بار انتظامیہ سے متعلقہ افراد کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرچکے ہیں تاہم کسی سطح پر کوئی ایکشن نہیں لیا جارہا ہے۔

Students Clash

NUML UNIVERSITY