لاہورہائیکورٹ میں بیگو،ٹک ٹاک،پب جی پر پابندی کیلئےدرخواست دائر

فریقین سے جواب طلب

لاہورہائیکورٹ میں بیگو،ٹک ٹاک،پب جی پر پابندی کیلئےایک اوردرخواست دائرکردی گئی ہے۔جمعہ کوعدالت نےوفاقی حکومت سمیت دیگر فریقین سےجواب طلب کرلیا ہے۔

لاہورہائیکورٹ میں دائردرخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہےکہ ان ایپلیکیشنز کی وجہ سےمعاشرے میں بے حیائی پھیل رہی ہےاوران کی وجہ سےاب تک بہت سی جانیں ضائع ہوچکی ہيں۔درخواستگزار کا کہنا ہے کہ بھارت سمیت 59 ممالک میں ان ایپس پر پابندی عائد ہے۔

واضح رہےکہ یکم جولائی 2020 کو پی ٹی اے نے آن لائن گیم پب جی پر پابندی لگائی تھی جس کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے 24 جولائی 2020 کو پب جی گیم کو بحال کر دیا تھا۔

پی ٹی اےکی جانب سے جاری اعلاميے ميں کہا گيا تھا کہ کمپنی کی طرف سے دی گئی وضاحت تسلی بخش ہے۔ پب جی انتظامیہ نے پی ٹی اے کے تمام سوالوں کا جواب دے دیا اس لیے کمپنی کے مثبت جواب پر پابندی ہٹائی گئی۔

Tabool ads will show in this div