بنگلادیش: روہنگیا مہاجرین کےکیمپ جل کر خاکستر

ساڑھے 3ہزار روہنگیا پناہ گزین رہائش پذیر تھے
[caption id="attachment_2160484" align="alignnone" width="800"] فوٹو: الجزیرہ[/caption]

بنگلادیش میں روہنگیا پناہ گزینوں کے ایک کیمپ میں زبردست آتشزدگی سے ہزاروں روہنگیا مہاجرین بے گھر ہوگئے۔

پناہ گزینوں سے متعلق اقوام متحدہ کے ادارے (یو این ایچ آر سی) کے مطابق بنگلادیش کے ٹیکناف علاقے کے پناہ گزین کیمپ میں ساڑھے 500 سے زائد مہاجرین کے کیمپ جل کرخاک ہوگئے۔ ان عارضی گھروں میں تقریباً ساڑھے 3ہزار پناہ گزین رہائش پذیر تھے۔ واقعے میں جانی نقصان نہیں ہوا۔

جرمن خبر رساں ادارے ڈی پی اے کے مطابق امدادی تنظیمیں اور مقامی انتظامیہ کے حکام بےگھر ہونے والے افراد میں ضروری رہائشی اشیاء کے ساتھ ساتھ کھانے اور ادویات تقسیم کر رہی ہے۔

حکومت کے ایک سینیئر ترجمان شمس الضحیٰ کا کہنا تھا کہ آگ اتنی بھیانک تھی کہ عملے کو اسے پر قابو پانے میں 2گھنٹے سے بھی زیادہ وقت لگا۔

دوسری جانب حکومت نے ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کیا ہے کہ تباہ ہونے والے پناہ گزینوں کے ان شیلٹرز کو دوبارہ وہیں نصب کیا جائے گا یا پھر ان مہاجرین کو کسی دوسرے مقام پر منتقل کیا جائے گا۔

بنگلادیش کی حکومت نے حالیہ ہفتوں میں کئی ہزار روہنگیا پناہ گزینوں کو بھاشن چار نامی ایک دور دراز جزیرے منتقل کیا ہے۔ لیکن بض انسانی حقوق کی تنظیموں اور کچھ پناہ گزینوں کا کہنا ہے کہ بہت سے مہاجرین کو ان کی مرضی کیخلاف زبردستی اس جزیرے پر رہنے کے لیے بھیجا گیا ہے۔

واضح رہے کہ سن2017 میں میانمار میں ہونے والے فوجی آپریشن کے بعد سے ہی بنگلادیش کے جنوب مشرقی علاقوں میں تقریباً 10لاکھ روہنگیا پناہ گزین ان کیمپوں میں مقیم ہیں۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ میانمار کی حکومت نے نسل کشی کی نیت سے روہنگیا مسلمانوں کیخلاف کارروائی کی جبکہ میانمار کے حکام اس سے انکار کرتے ہیں۔

UNITED NATIONS

Rohingya Camp Fire

Tabool ads will show in this div