وزیراعظم اوروزیرداخلہ کی اُسامہ کےاہل خانہ کومکمل تحقیقات کی یقین دہانی

پانچوں سابق پولیس اہلکاروں نےغلطی کا اعتراف کرلیا

وزیراعظم عمران خان اوروزیرداخلہ شیخ رشید نےاُسامہ ستی کےاہلخانہ کواس کیس کی مکمل تحقیقات کی یقین دہانی کروائی ہے۔

بدھ کواسلام آباد میں وزیراعظم سےاسلام آباد میں پولیس کی فائرنگ سےقتل ہونےوالےشہری اسامہ ستی کے اہل خانہ نےملاقات کی۔ وزیراعظم نےمقتول کی مغفرت کےلیےفاتحہ کی اوراہلخانہ سےتعزیت کی۔ وزیراعظم نے اسامہ ستی کے قتل کی تحقیقات سےمتعلق مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی۔

اس سےقبل وزیرداخلہ شیخ رشید نے اسامہ کے والد کو واقعے کی تحقیقات کی پیشکش کردی۔ ٹیلفونک رابطے کے دوران مقتول کے والد سے بات کرتےہوئے شیخ رشید نے کہا کہ واقعہ افسوسناک ہے اورحکومت آزادانہ تحقیقات کیلئے تیارہیں۔ شیخ رشید نے بتایا کہ وزارت داخلہ اورضلعی انتظامیہ کی تحقیقاتی رپورٹس دیکھ لیں،آپ تحقیقات سے مطمئن ہوں گے تو رپورٹ آگے بھجوائیں گے،وزیراعظم کی بھی ہدایت ہےکہ تحقیقات آپ کی مرضی سے کی جائیں گے۔

اس کےعلاوہ تفتیشی افسر نے بدھ کو عدالت کو بتایا ہے کہ اسامہ ستی کیس میں گرفتار پانچوں سابق پولیس اہلکاروں نےغلطی کا اعتراف کرلیا ہے۔ تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا ہے کہ ملزمان اعتراف کررہےہیں کہ ان کےہاتھوں بےگناہ شہری کی جان گئی۔ جج راجہ جواد عباس نے تفتیشی افسر سے استفسار کیا کہ کیا آپ نے ملزمان کا بیان قلمبند کرلیا ہے؟ تفتیشی افسر نے جواب دیا کہ تاحال ملزمان کا مجسٹریٹ کے سامنے بیان قلمبند نہیں ہوسکا۔

تفتیشی افسرنےعدالت سے درخواست کی کہ جےآئی ٹی کی تفتیش بھی مکمل ہونی ہے،مزید جسمانی ریمانڈ دیاجائے۔عدالت نے ملزمان کا مزید 5 دن کا ریماںڈ بھی منظورکرلیا ۔

مزید پڑھیے:اسامہ ستّی قتل کیس: پانچوں اہلکار قصوروار قرار

اسلام آباد پولیس کے اہلکاروں نے جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب (2 جنوری کو) سیکٹر جی 10 میں ایک کار پر فائرنگ کی، جس میں سوار نوجوان جاں بحق ہوگیا تھا۔ پولیس نے دعویٰ کیا تھا کہ مشکوک گاڑی اشارے کے باوجود نہ رکی تو ٹائروں پر فائر کئے گئے تاہم اس دوران گولیاں نوجوان کو لگ گئیں۔

OSAMA SATTI

Tabool ads will show in this div