سعودی عرب کاگاڑیوں اورسڑکوں کے بغیر نیا شہر بسانے کااعلان

شہر 170کلومیٹر پرمحیط اور کاربن فری ہوگا، محمد بن سلمان
Jan 11, 2021

سعودی عرب نے مستقبل کے شہر نیوم میں ’’دی لائن‘‘ کے نام سے نیا شہر بنانے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے، یہ شہر کاربن فری ہوگا جہاں گاڑیاں اور سڑکیں نہیں ہوں گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کی رپورٹ کے مطابق اتوار کو شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے جاری ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ’’دا لائن 170 کلومیٹر پر محیط ہائپر سے مربوط ایک نئی پٹی ہوگی، جسے فطرت کے عین مطابق ڈیزائن کیا جائے گا اور اس میں کاریں اور شاہراہیں نہیں ہوں گی بلکہ وہاں کمیونٹیوں کو مصنوعی ٹیکنالوجی سے آراستہ اور ہم آہنگ کیا جائے گا، اس کی بدولت وہاں کے مکین اور کاروباریوں کو اپنا معیارِ زندگی بلند کرنے کے مواقع میسرآئیں گے۔

دی لائن کا منصوبہ بھی نیوم اور سعودی عرب کے ویژن 2030ء کا حصہ ہے، اس سے ملازمتوں کے 3 لاکھ 80 ہزار نئے مواقع پیدا ہونگے اور اس کی بدولت سعودی عرب کی مجموی قومی پیداوار (جی ڈی پی) میں 2030ء تک 180 ارب ریال (48 ارب ڈالر) کا اضافہ ہوگا۔

محمد بن سلمان نے اپنے بیان میں مزید کہا ہے کہ پوری انسانی تاریخ میں شہر ان کے مکینوں کے تحفظ کیلئے تعمیر کئے جاتے تھے لیکن صنعتی انقلاب کے بعد شہروں نے لوگوں پر کاروں، مشینوں اور فیکٹریوں کو ترجیح دینا شروع کردیا، جن شہروں کو دنیا کے جدید شہر کہا جاتا ہے وہاں لوگ اپنی زندگیوں کے سالہا سال سفر میں گزار دیتے ہیں۔ 2050ء تک ان کے سفر کا دورانیہ دُگنا ہوجائے گا اور کاربن گیسوں کے اخراج میں اضافے اور سمندر کی سطح بلند ہونے کے بعد ایک ارب افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنا پڑے گا، تب تک 90 فیصد افراد آلودہ فضاء میں زندگیاں گزار رہے ہوں گے۔

سعودی ولی عہد کا منصوبے کا اعلان کرتے ہوئے کہنا ہے کہ ہم ترقی کے نام پر فطرت کو کیوں قربان کریں؟، آج میں نیوم کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین کی حیثیت سے دی لائن کا منصوبہ پیش کررہا ہوں، یہ 10 لاکھ مکینوں کا مسکن شہر ہوگا اور یہ 170 کلومیٹر طویل ہوگا، اس کے تحت نیوم میں 95 فیصد فطرت کو محفوظ بنایا جائے گا، اس میں کاریں ہوں گی اور نہ شاہراہیں، یہاں کاربن کا اخراج بھی صفر ہوگا۔

ان کے بقول دی لائن کا منصوبہ شہری ترقی کا ایک نیا تصور پیش کرنے کیلئے ڈیزائن کیا گیا ہے، شاہراہوں کے کسی انفرااسٹرکچر کے بغیر گزشتہ 150 سال میں یہ پہلا منصوبہ ہوگا، عام شہروں کے ذرائع نقل و حمل کے برعکس دی لائن منصوبے میں سفری وقت کو کم کرنے کیلئے تیز رفتار سفر کے نئے حل پیش کئے جائیں گے تاکہ اس کے مکین اپنی صحت پر توجہ مرکوز رکھ سکیں، جدید ٹیکنالوجی کی بدولت اس نئے شہر میں زیادہ سے زیادہ فاصلہ صرف 20 منٹ میں طے کیا جاسکے گا۔

انہوں نے بتایا کہ نیوم منصوبہ کے پائیدار ترقی کے تصور کو عملی جامہ پہناتے ہوئے دی لائن میں صاف توانائی مہیا کی جائے گی، یہ آلودگی سے پاک، صاف اور ماحول دوست ہوگی، اس منصوبے پر تعمیراتی کام اس سال کی پہلی سہ ماہی میں شروع ہوجائے گا۔

MOHAMMAD BIN SALMAN

THE LINE

Tabool ads will show in this div