نیٹو کی پہلی خاتون جیٹ پائلٹ کس مسلمان ملک سےتھیں؟

لیمان طویل عرصہ جیٹ پائلٹ رہیں
Turkey fighter فوٹو: اے ایف پی

نیٹو کی پہلی خاتون جیٹ پائلٹ کا تعلق ایک مسلمان ملک سے تھا اور یہ اس وقت کی بات ہے جب آج کا سب سے بڑا فوجی اتحاد ابھی نومولود ہی تھا۔

ترک خبر رساں ادارے ٹی آر ٹی کے مطابق وہ جیٹ پائلٹ ترکی سے تعلق رکھتی تھیں اور ان کا نام لیمان بوزکرت آلتن چیکچ تھا جو سن 1933 پیدا ہوئی تھیں۔

لیمان کو بچپن سے ہی اڑنے کا شوق تھا۔ ہائی اسکول کی تعلیم مکمل کرتے ہی انہوں نے اپنے خواب کو حقیقت بنانے کے لئے ایک بڑا قدم اٹھایا اور انونو انسٹیٹیوٹ میں طیارے کی تعلیم حاصل کرنا شروع کی۔

Turkey woman pilot

سن 1954 کے فیصلے کی رُو سے جب خواتین کو بھی ترک مسلح افواج میں شمولیت کا موقع دیا گیا تو اس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے لیمان نے ازمیر  فضائیہ حرب اکیڈمی میں داخلہ لیا اور اکتوبر 1955 میں وہاں سے تعلیم حاصل کرنا شروع کر دی۔ پنکھے والے طیارے کے ساتھ دی جانے والی ٹریننگ کو سن 1957 میں مکمل کر کے وہ فارغ التحصیل ہوئیں۔

لیکن لیمان بوزکرت آلتن چیکچ کا شوق یہیں ختم نہیں ہوا بلکہ انہوں نے زیادہ بلندی پر اڑنے کے لئے جیٹ پائلٹ کی تربیت حاصل کرنا شروع کر دی۔ تربیت مکمل ہونے پر حاصل کردہ ڈپلومہ کے ساتھ لیمان 9 سال تک آسمانوں پر صرف ترکی ہی نہیں بلکہ  نیٹو  فورسز کی بھی پہلی اور ایک طویل مدت تک واحد خاتون جیٹ پائلٹ رہیں۔

NATO

Tabool ads will show in this div