ویڈیو: مچھ سانحہ: خواتین کے "عمران خان کوئٹہ آؤ" کے نعرے

شرکا نے پلے کارڈ بھی تھامے ہوئے ہیں

کوئٹہ کے مغربی بائی پاس پر دھرنے میں موجود خواتین نے "عمران خان کوئٹہ آؤ" کے نعرے لگائے۔

مچھ سانحہ کے خلاف کوئٹہ کے مغربی بائی پاس پر ہزارہ برادری کا میتوں کے ہمراہ دھرنا اور احتجاج تیسرے روز بھی جاری ہیں۔ دھرنے میں خواتین، بچے اور بزرگ بھی شامل ہیں۔

اس موقع پر دھرنے میں شریک ہزارہ برادری کی خواتین نے "عمران خان کوئٹہ آو" کے نعرے لگائے۔ شرکا نے پلے کارڈز بھی ہاتھوں میں اٹھائے رکھے تھے، جس ہر جابجا لکھا تھا کہ " ہمیں نہ شعیہ ، نہ ہزارہ بلکہ کمزور ہونے کی بنا پر مارا جا رہا ہے"۔

ایک پلے کارڈ پر یہ بھی لکھا تھا کہ کالعدم "لشکر جھنگوی اور داعش سے ہمارا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے"۔

دھرنے میں شریک ایک بچی کے ہاتھوں میں موجود پلے کارڈ پر لکھا تھا کہ "جانور کے بھی حقوق ہوتے ہیں،مگر ہزارہ کے حقوق کہاں ہیں"۔

دھرنے میں شریک افراد نے ہاتھوں میں مچھ سانحہ میں قتل ہونے والے اپنے پیاروں کی تصاویر بھی تھامی ہوئی تھیں، جس سے واضح ہو رہا تھا کہ مرنے والوں میں نوجوان اور کم عمر لڑکے بھی شامل تھے۔

HAZARA

Tabool ads will show in this div