نریندر مودی سری نگر پہنچ گئے، شہر میں کرفیو نافذ

modi-280x183

سری نگر: بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی مقبوضہ کشمير کے دارالحکومت سري نگر پہنچ گئے جہاں ان کی آمد کیخلاف آج حريت رہنماؤں نے ملین مارچ کا اعلان کیا ہے، جس پر کل سے کرفيو نافذ ہے۔

مودی سرکار کی آمد پر سرينگر اور ديگر شہروں ميں موبائل سروسز اور انٹرنيٹ بند کریئے گئے جبکہ ہزاروں کشميري نوجوان کو گرفتار اور سید علی گیلانی سمیت دیگر حريت رہنماوں کو نظر بند کیا ہوا ہے۔

مقبوضہ کشميرميں بھارتي فورسز کي ہٹ دھرمي سے سري نگر ميں مکمل کرفيو نافذ ہے۔ سڑکيں سنسان، بھارتي فورسز نے ٹائر جلا کر خار دار تاروں سے شہر کي مختلف سڑکيں بلاک کرديں۔

ميسومہ، نوہتا، صفاک دل، راہماوتي، خانيار، مہاج گنج اور کرل خود کے علاقوں ميں زندگي کا پہيہ جام، بھارتي فورسز کي مکمل ناکہ بندي کی۔

ذرائع کے مطابق مقبوضہ کشمیرمیں 1200 سے زائد حریت رہنما و کارکن گرفتار کیا گیا ہے، جس میں مودی کے خلاف نکالی گئی ریلی کے زیادہ تر افراد گرفتار کیے گئے۔ جبکہ مودی کے جلسے کو کامیاب بنانے کیلئے دہلی سے لوگ بلائے گئے۔

مقامی رہنماؤں کا کہنا تھا کہ مودی جی اپنے ساتھ سول کپڑوں میں لوگ لائیں گے اور تالیاں بجوائیں گے۔ کشمیریوں کو تو گھروں میں بند کردیا گیا ہے۔

سري نگر ميں يہ کرفيو حريت رہنما مير وعظ عمر فاروق کے احتجاج کے اعلان پر نافذ کيا گيا، مير واعظ نے گزشتہ روز اپني ٹوئيٹ ميں بھي نريندر مودي کو تنقيد کا نشانہ بنايا تھا۔ سماء

indian forces

SYED ALI GEELANI

Narendar Modi

curfew in Srinagar

Hurreyat leaders

million march

Tabool ads will show in this div