جرمنی میں پاکستانیوں کی مسجد کا نائب امام قتل

شاہد قادری کا تعلق گجرات سے تھا
Dec 22, 2020

جرمنی میں پاکستانیوں کی قائم کردہ مسجد کے نائب امام کو پارک میں چہل قدمی کے دوران آہنی راڈ سے حملہ کرکے قتل کردیا گیا، واقعے میں ان کی اہلیہ بھی زخمی ہوئیں۔

ڈی ڈبلیو اردو کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جنوبی جرمن صوبے باڈن ورٹمبرگ کے دارالحکومت اسٹٹ گارٹ سے شائع ہونے والے مقامی اخبار کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ پاکستانی تارکین وطن کی قائم کی گئی مسجد کے نائب امام شاہد قادری اپنی اہلیہ کے ہمراہ پیر 21 دسمبر کی شام گھر کے قریب چہل قدمی کررہے تھے کہ نامعلوم افراد نے ان پر عقب سے حملہ کردیا۔

پولیس کے مطابق شاہد قادری موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے، پولیس فرار ہونے والے حملہ آوروں کی تلاش کیلئے کوشش کررہی ہے۔ پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ اس جرم کا ارتکاب دریائے فِلز کے قریب ایک نیم جنگلاتی علاقے میں سیر کیلئے جانے والوں کیلئے بنائے گئے پیدل راستے پر کیا گیا۔

جرمن میڈیا کے مطابق 26 سالہ نائب امام شاہد نواز قادری کا تعلق پاکستان کے علاقے گجرات سے تھا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اطلاع ملنے پر پولیس فوراً موقع پر پہنچ گئی تھی اور کئی پولیس اہلکاروں کی مدد سے ثبوت محفوظ کرلئے گئے جبکہ حملہ آوروں کی تلاش کیلئے ہیلی کاپٹر بھی استعمال کیا گیا۔

اسٹٹ گارٹ میں پاکستانی تارکین وطن اور پاکستانی نژاد جرمن شہریوں کی نمائندہ تنظیم پاکستان ویلفیئر سوسائٹی کے صدر شیخ منیر نے ڈی ڈبلیو کو بتایا کہ شاہد نواز قادری مسجد المدینہ میں نائب امام تھے، جو تقریباً 20 سال قبل ان کی ہی قائم کردہ تنظیم کے زیر انتظام تعمیر کی گئی تھی، شاہد رضاکارانہ طور پر مسجد میں اپنے فرائض انجام دیتے تھے، وہ پیشے کے اعتبار سے ٹیکسی ڈرائیور تھے، انہوں نے پسماندگان میں بیوہ اور دو بچے چھوڑے ہیں۔