لاہور، بھائی کے مبینہ تشدد سے بہن جاں بحق

چند دن بعد شادی تھی
Dec 16, 2020

لاہور میں گھریلو تنازع پر بھائی نے مبینہ طور پر بہن کو تشدد کرکے قتل کردیا۔ مقتولہ کی تین روز بعد شادی ہونے والی تھی۔ گھر والے واقع پر پردہ ڈالتے رہے۔

لاہور کے علاقہ نشتر کالونی میں نوید نامی شخص نے اپنی بیس سالہ بہن رخسانہ کو معمولی گھریلو تنازع پر تشدد کا نشانہ بنایا اور وہ اسپتال لے جاتے ہوئے دم توڑ گئی۔

مقتولہ کی ماں زبیدہ بی بی کا کہا ہے کہ کچھ دن پہلے رخسانہ سیڑھیوں سے گری تھی جس کی وجہ سے اس کے چہرے پر خراشیں آئی تھیں۔ میں اسے دوائی کھلا کر کام پر چلی گئی۔ پیچھے پتہ نہیں کیا ہوا کیا نہیں ہوا۔ میرے بیٹے نے اسے مارا۔

پولیس نے اپنی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے ملزم کو حراست میں لے لیا ہے۔ ایس ایچ او ابرار شاہ کے مطابق مقتولہ کے چہرے سمیت جسم کے دیگر اعضا پر نشانات تھے۔ اس پر ہمیں شک ہوا۔ پھر ہم نے پوسٹمارٹم کے لیے لاش بھجوادی جبکہ گھر والے ہر چیز پر پردہ ڈال رہے تھے کہ کچھ نہیں ہوا، یہ طبعی موت ہے۔

مقتولہ رخسانہ کی 19 دسمبر کو شادی طے تھی۔ وہ  پانچ بہن بھائیوں میں تیسرے نمبر پر تھی۔ قتل کی یہ واردات غیرت کے نام پر ہوئی یا اس کی وجہ کچھ اور ہے، اصل حقائق پوسٹمارٹم رپورٹ اور تفتیش کے بعد ہی سامنے آئیں گی۔