خیبرٹیچنگ اسپتال میں اموات، ملازمین ذمہ دار قرار

تمام معطل ملازمین سے تحریری بیانات لیے جائیں گے
فوٹو: ٹوئٹر
فوٹو: ٹوئٹر
فوٹو: ٹوئٹر

خیبر پختونخوا کے صوبائی دارالحکومت پشاور کے خیبر ٹیچنگ اسپتال میں زیر علاج کرونا مریضوں آکسیجن نہ ملنے کے باعث انتقال کے معاملے پر انکوائری کمیٹی نے معطل ملازمین کو ذمہ دار قرار دے دیا۔

دستاویزات کے مطابق تمام ملازمین کو انکوائری کمیٹی کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی گئی ہےجبکہ ذمہ دار قرار دے گئے ملازمین میں سابقہ اسپتال ڈائیریکٹر طاہر ندیم، فیسلیٹیشن منیجر طاہر شہزاد، سپلائی چین مینیجر علی وقاس، بائیو میڈیکل انجنیئر بلال بابک، آکسیجن پلانٹ اسسٹنٹ نعمت اور دو آکسیجن پلانٹ ڈیوٹی ملازمین شامل ہیں۔

دستاویزات کے مطابق تمام معطل ملازمین سے تحریری بیانات لیے جائیں گے، تحریری جواب جمع نہ کرانے کی صورت میں کارروائی ہوگی جبکہ چارج شیٹ میں تمام ملازمین کی غفلت اور کوتاہیوں کا ذکر شامل ہے۔

چیئرمین بی او جی ندیم خاور کا کہنا ہے کہ معطل ملازمین کے بیانات قلم بند کرنے کے لیے مزید وقت دیا گیا تھا جبکہ وزیراعلیٰ سے مزید 3 دن کا وقت مانگا ہے۔

چیئرمین بی او جی نے مزید کہا کہ انکوائری کو مزید شفاف بنانے کے لیے دوسری کمیٹی تشکیل دی ہے جبکہ غفلت کے مرتکب ملازمین کیخلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں اسپتال میں زیرعلاج کرونا کے7 مریض آکسیجن نہ ملنے کے باعث انتقال کرگئے تھے۔

واقعہ خیبر ٹیچنگ اسپتال میں گزشتہ رات 5دسمبر کو پیش آیا تھا۔

KHYBER TEACHING HOSPITAL

Tabool ads will show in this div