بلوچستان: وکلاء کا گوادر میں باڑ لگانے کیخلاف احتجاج کافیصلہ

ہائی کورٹ میں چیلنج کرنے کا بھی اعلان
فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی
Gwadar Fencing Project فوٹو: اے ایف پی

بلوچستان بار کونسل اور کوئٹہ بار ایسوسی ایشن نے گوادر شہر میں باڑ لگانے کے فیصلے کو بلوچستان ہائیکورٹ میں چیلنج کرنے اور باڑ لگانے کے عمل کے خلاف احتجاج کا فیصلہ کیا ہے۔

وکلاء رہنماؤں کا کہنا ہے کہ باڑ لگانا صوبے کی ساحلی پٹی کو وفاق میں شامل کرنے کی کوشش کا تسلسل ہے۔

بلوچستان بار کونسل کے وائرس چئیرمین منیر کاکڑ نے کونسل کے دیگر عہدیداروں اور کوئٹہ بار ایسوسی ایشن کے صدر اقبال کاسی سمیت دیگر وکلاء نے کوئٹہ میں پریس کانفرنس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ گوادر میں باڑ لگانا شہر کو بلوچستان سے الگ کرنے کی سازش ہے اور بلوچستان بار کونسل گوادر میں باڑ لگانے کے عمل کی مذمت کرتا ہے۔

وکلاء کا کہنا تھا کہ آئین ہر شہری کو آزادانہ نقل وحمل کی اجازت دیتا ہے لیکن سیکیورٹی اور امن و امان کے نام پر شہر کو سیل کرنے سے لوگوں کے حقوق متاثر ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ گوادر میں عوام پینے کے صاف پانی سے محروم ہیں لیکن باڑ لگایا جا رہا ہے۔ گوادر میں باڑ لگانے سے صوبے میں احساس محرومی میں مزید اضافہ ہوگا لہٰذا وکلاء تنظیموں نے عوام دشمن اقدام کے خلاف احتجاج کا فیصلہ کیا ہے اور گوادر باڑ لگانے کے فیصلے کو بلوچستان ہائیکورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

GWADAR FENCING PROJECT

Tabool ads will show in this div