ڈی جےبٹ کی گرفتاری پر عمران خان نے کیا کہاتھا

ماضی کا دوست دشمن بن گیا
Dec 09, 2020
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/12/nml-dj-butt.mp4"][/video]

لاہور پولیس نے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے جلسے قبل ساؤنڈ سسٹم کی سہولت فراہم کرنے والے شخص ڈی جے بٹ کو گرفتار کرلیا ہے مگر ڈی جے بٹ چند سال قبل عمران خان کے دوست تھے۔

ڈی جے بٹ کے خلاف ایف آئی آر میں میں پولیس نے الزام عائد کیا ہے کہ وہ اونچی آواز میں میوزک سن رہے تھے جس کی وجہ سے عوام کے سکون میں خلل پیدا ہوا۔ ساتھ ہی ڈی جے بٹ پر کارسرکار میں مداخلت اور اس کے دفتر آفس سے بندوق بھی برآمد ہونے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

ڈی جے بٹ لاہور میں ہر قسم کی تقریبات کو ساؤنڈ سسٹم اور لائٹنگ کی سہولیات فراہم کرتے ہیں۔ ان کو عروج 2014 میں تحریک انصاف کے 126 روز پر محیط طویل دھرنے کے دوران ملی۔ اس دھرنے میں وہ عمران خان کے ’دوست‘ بن گئے اور ان کے ساتھ تصاویر بھی بناتے رہے۔

اس وقت جب لاہور میں تحریک انصاف کے کچھ کارکنان کو گرفتار کیا گیا تو عمران خان نے اس کی مذمت کی اور خاص طور پر ڈی جے بٹ کا نام لیکر مسلم لیگ ن کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

عمران خان نے اس وقت ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’کس قانون کے تحت پرامن کارکنان کو گرفتار کیا جارہا ہے۔ میوزک اور لائٹنگ کی سہولیات فراہم کرنے پر ڈی جے بٹ کو گرفتار کرنا ن لیگ کا ظلم ہے۔

IMRAN KHAN

DJ butt

Tabool ads will show in this div