پاکپتن،کورٹ میرج کرنے پر لڑکے کی والدہ اور بہن اغوا

دو دن بعد مقدمہ درج

پنجاب کے ضلع پاکپتن میں پسند کی شادی کرنے پر لڑکی کے والدین نے لڑکے کی والدہ اور بہن کو اغوا کرلیا۔ پولیس نے دو دن بعد مقدمہ درج کرلیا مگر مغوی تاحال بازیاب نہ ہوسکے۔

فیصل آباد کی رہائشی شائستہ نامی لڑکی نے پاکپتن کے طاہر نامی نوجوان سے 10 اکتوبر کو کورٹ میرج کرلی تھی۔ لڑکی کے والدین دونوں کے پیچھے پاکپتن پہنچے اور لڑکے کے گھر پر حملہ کرکے اس کی 45 سالہ والدہ اور کمسن بہن کو بھی کو زبردستی اپنے ساتھ لے گئے۔

لڑکے کی خالہ کا کہنا ہے کہ میری بہن یہاں بیٹھ کر سبزی بنا رہی تھی۔ اس دوران ملزمان آئے اور اس کو بازو سے پکڑ لیا۔ پھر کمرے میں گئے، وہاں سے 10 سالہ بیٹی کو بھی اٹھا لیا اور چلے گئے۔

ماموں نے بتایا کہ ملزمان گھر کے باہر دو گھنٹے تک ملزمان فائرنگ کرتے رہے اور پھر میری بہن اور بھانجی کو اٹھا لے گئے۔ اس نے الزام عائد کیا کہ 15 پر کال بھی کی مگر پولیس نہیں آئی۔ مغوی خاتون کے شوہر کے مطابق جب وہ تھانے گئے تو ایس ایچ او نے گالیاں دے کر انہیں وہاں سے بھگا دیا۔

دو دن مغویوں کا پتہ نہ چلنے اور گھر والوں کے احتجاج پر پولیس نے ہفتے کو مقدمہ درج کرلیا ہے جبکہ ماں اور کمسن بیٹی کو تاحال بازیاب نہ کروا سکی۔

PUNJAB

Tabool ads will show in this div