کشمورگینگ ریپ: پولیس نے 4سالہ متاثرہ بچی کی ویڈیو بنالی

پولیس کو ویڈیو بنانے کی اجازت کس نے دی؟

ایک چار سالہ بچی کا کشمور میں گینگ ریپ ہوا اور یہی صورتحال اس معصوم کی والدہ کے ساتھ بھی پیش آئی۔ بچی نے اپنی ماں کے ہمراہ جو روداد سنائی وہ سوشل میڈیا پر شیئر ہوئی ہے۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو شیئر ہوئی ہے جس میں ایک چار سالہ بچی اور اس کی والدہ جو کشمور میں گینگ ریپ کا شکار ہوئیں اپنی دردناک روداد سناتی دیکھی جاسکتی ہیں۔

اس ویڈیو کو دیکھ کر لگتا ہے کہ اسے ایک پولیس اہلکار نے اسمارٹ فون کے ذریعے ریکارڈ کی ہے جس میں بچی اپنی ماں اور ایک اہلکار کے درمیان کھڑی ہے جبکہ دو سپاہی ان کے عقب میں موجود ہیں۔

ویڈیو میں ماں اپنی بچی سے کہتی دکھائی دیتی ہے کہ جو واقعہ اس معصوم کے ساتھ پیش آیا وہ اسے بیان کردے جس پر سسکیاں بھرتی بچی سرگوشیوں میں کچھ کہنا شروع کرتی۔

ماں کیمرے کی جانب اپنا رخ کرتی ہے اور بچی کی ترجمہ کرتی ہے کہ انکل نے اس کے ساتھ زیادتی کی۔ اس کے بعد بچی ویڈیو بنانے والے کو اپنے زخم دکھاتی ہے۔

یہاں یہ بات غیر واضح ہے کہ ان ماں بیٹی کی ویڈیو ریکارڈ کرنے والوں کو اس کا اختیار کیسے ملا اور یہ کہ اس موقع پر چائلڈ پروٹیکشن افسر یا خاتون پولیس اہلکار ہمراہ کیوں نہیں تھیں۔

KASHMORE RAPE CASE

Tabool ads will show in this div