آزاد قوم اور خود مختار ریاست کی طرح فیصلے کرنا ہونگے، شاہ فرمان

اسٹاف رپورٹ


پشاور : وزیر اطلاعات خیبرپختونخوا شاہ فرمان کا کہنا ہے کہ میزائل حملوں کے خلاف دھرنے اور احتجاج میں شرکت کیلئے دیگر سیاسی جماعتوں سے بھی رابطے کئے جائیں گے، اس وقت ایک اور اے پی سی کی اشد ضرورت ہے، امریکا صلح کیلئے کسی کو موقع دینے پر تیار نہیں، آزاد قوم اور خود مختار ریاست کی طرح فیصلے کرنا ہوں گے۔


صوبائی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ فرمان کا کہنا ہے کہ خیبرپختونخوا کے وزراء میزائل حملوں کے خلاف قومی اسمبلی کے باہر دھرنا دیں گے جبکہ امریکی سفارتخانے اور اقوام متحدہ کے دفاتر کے سامنے احتجاج بھی کیا جائے گا۔


انہوں نے مزید کہا کہ احتجاج اور دھرنوں میں شرکت کیلئے دیگر سیاسی جماعتوں سے بھی رابطے کئے جائیں جس کیلئے تین رکنی کمیٹی بنادی گئی ہے، آج ایک بار پھر آل پارٹیز کانفرنس کی اشد ضرورت ہے، وفاقی حکومت کو مینڈیٹ دیا گیا تھا تاہم انہوں نے کوئی ایکشن نہیں لیا۔


شاہ فرمان کہتے ہیں کہ بین الاقوامی اداروں نے بھی اپنی رپورٹس میں کہا ہے کہ میزائل حملوں میں معصوم لوگ شہید ہورہے ہیں، جنگ دو فریقین کے درمیان ہوتی ہے وہی صلح یا لڑائی کا فیصلہ کرتے ہیں، تیسرا فریق اس میں دخل نہیں دے سکتا، امریکا صلح کیلئے کسی کو موقع دینے کو تیار نہیں، ہمیں آزاد قوم اور خود مختار ریاست کی طرح فیصلے کرنا ہوں گے۔


ان کا کہنا ہے کہ مشکل ترین حالات کے باوجود قائد اعظم نے ہنری ٹرومین کو اسرائیل کے وجود کے خلاف خط لکھا، آج کا پاکستان 1947ء سے زیادہ خود مختار اور مضبوط ہے، ہم امریکا سے بات کیوں نہیں کرسکتے، لوگ ہمیں ڈراتے ہیں کہ امریکا ناراض ہوجائے گا، سرتاج عزیز کی یقین دہانی کے باوجود میزائل حملہ کیا گیا۔ سماء

اور

کی

Gullu Butt

Amnesty International

woes

interference

qualifier

tanker

Tabool ads will show in this div