ایاز صادق کيخلاف اندراج مقدمے کيلئےدرخواست دائر

درخواست لاہور کے تھانے میں دی گئی
فائل فوٹو

سابق اسپیکر قومی اسمبلی اور ن لیگی رہنما ایاز صادق کے متنازعہ بیان پر لاہور کے تھانے میں اندراج مقدمے کیلئے درخواست دی گئی ہے۔

اياز صادق کے خلاف لاہور کے  تھانہ سول لائن ميں مقدمہ کیلئے درخواست دی گئی۔ درخواست عام شہری فرقان کی جانب سے جمع کرائی گئی ہے۔

ن لیگ والےسارےکام رات کی تاریکی میں کرتےہیں،شہبازگل

درخواست کے متن کے مطابق اياز صادق کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کيا جائے۔ درخواست گزار کا مزید کہنا تھا کہ اياز صادق نے افواج پاکستان کے خلاف جھوٹا پروپيگنڈا کيا۔

ایازصادق کابیان،بات معافی سےآگےنکل چکی ہے،شبلی

درخواست میں شہری نے واضح کرتے ہوئے یہ بھی لکھا ہے کہ وہ ایک محب وطن پاکستانی ہے اور اس کا کسی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق نہيں ہے۔

واضح رہے کہ ن لیگی رہنما ایاز صادق سے منسوب بیان سے متعلق کہا گیا ہے کہ انہوں نے قومی اسمبلی میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ "ابھینندن کی تو بات ہی نہ کریں۔ مجھے یاد ہے شاہ محمود قریشی صاحب بھی اس میٹنگ میں تھے، جس میں وزیرِ اعظم نے آنے سے انکار کر دیا اور فوج کے سربراہ تشریف لائے۔ پیر کانپ رہے تھے، ماتھے پر پسینہ تھا، اور ہم سے شاہ محمود صاحب نے کہا کہ خدا کا واسطہ ہے، اب اس (ابھینندن) کو واپس جانے دیں کیونکہ اگر ایسا نہ ہوا تو رات 9 بجے ہندوستان پاکستان پر حملہ کرنے والا ہے۔ ہندوستان نے کوئی حملہ نہیں کرنا تھا، صرف گھٹنے ٹیک کر ابھینندن کو واپس بھیجنا تھا"۔

سوشل میڈیا پر چلنے والی ایاز صادق کی ویڈیوز میں یہ بیان سامنے آنے پر حکومتی وزرا اور اراکین کی جانب سے ایاز صادق کے بیان کی سخت مذمت کی گئی۔ 29 اکتوبر کو ڈی جی آئی ایس پی آر کی جانب سے بھی ایاز صادق کے بیان سے متعلق وضاحت دی گئی۔

DG ISPR

AYAZ SADIQ

ABHINANDAN

Tabool ads will show in this div