ملک کیلئے بدعنوانی کینسر بن گئی ہے،چیف جسٹس پاکستان

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ بدعنوانی ملک کیلئے کینسر بن گئی ہے، عدلیہ اور دیگر اداروں سے بدعنوانی کا خاتمہ ناگزیر ہے۔

اسلام آباد میں قومی عدالتی پالیسی ساز کمیٹی کے اجلاس سے خطاب میں چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ عدلیہ بحالی تحریک کے بعد بدعنوانی کا خاتمہ ایک اہم مطالبہ تھا۔ ضلعی عدالتوں سے بدعنوانی کے خاتمے کے لیے ہائی کورٹس کے چیف جسٹسز کا کردار قابل ستائش ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلوں سے الیکشن کمیشن مضبوط ہوا، امید کرتے ہیں کہ ایوان میں منتخب ہو کر آنے والے نمائندے آرٹیکل باسٹھ ، تریسٹھ پر پورے اتریں گے۔ عدلیہ آئین کی محافظ ہے، عوام کے حقوق کا محافظ ہوتے ہوئے، عدلیہ نے جمہوریت اور اداروں کو مستحکم کیا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ وفاقی سروس ٹریبونل کا فعال ہونا آئینی ضرورت ہے، سروسز ٹریبونل کے غیر فعال ہونے سے ہزاروں سرکاری ملازم متاثر ہو رہے ہیں، حکومت کو چاہئیے کے وہ عدالتی احکامات کی روشنی میں تعیناتیاں کریں۔ اجلاس میں فیڈرل شریعت کورٹ کے چیف جسٹس سمایت چاروں صوبوں کی ہائی کورٹس کے چیف جسٹز بھی شریک ہیں۔ سماء

ملک

express

mothers

Tabool ads will show in this div