سیاسی جماعتوں کی سبکدوش ہونےوالےآرمی چیف کیانی سےمتعلق آراء

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی اپنی چھ سالہ مدت ملازمت پوری کر کے ٹھائیس نومبر کو ریٹائر ہو رہے ہیں، سیاسی جماعتیں جنرل کیانی کے دور کو مختلف نظر سے دیکھتی ہیں۔

آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی کا شمار ملکی تاریخ کے ان چند سپہ سالاروں میں ہوتا ہے، جنہوں نے جمہوریت کو پروان چڑھانے میں عملاً مدد فراہم کی۔ سیاسی قیادت جنرل اشفاق پرویز کیانی کی خدمات کو تحسین کی نگاہ سے دیکھتی ہے، قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کہتے ہیں، جنرل کیانی نے بطور آرمی چیف اپنی ذمہ داریاں خوش اسلوبی سے پوری کیں۔

اے این پی کے قائم مقام صدر حاجی عدیل کا کہنا ہے کہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے ہمیشہ حکومت کی ہدایت کو مدنظر رکھا۔ زاہد خان بھی آرمی چیف کی دہشت گردی کے خلاف خدمات کے معترف ہیں۔

دیگر سیاسی رہ نماؤں کا بھی کہنا کہ اشفاق پرویز کیانی نے اپنے دائرہ کار میں رہتے ہوئے ذمہ داریاں ادا کیں۔ یہی وجہ ہے کہ وہ  اپنے پیشرو کے برعکس باوقار انداز میں آرمی ہاؤس سے رخصت ہونے کی تیاری کر رہے ہیں۔

سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ تمام ادارے اپنے دائرہ اختیار میں رہ کر کام کرتے رہیں تو کوئی وجہ نہیں کہ جمہوریت مستحکم نہ ہو اور ملک ترقی نہ کرے۔ سماء

کی

چیف

surgery

comedian

Tabool ads will show in this div