غیرقانونی تجارت کی روک تھام کیلئےایف بی آر،آئی پی اومیں معاہدہ

FBR اسلام آباد : ملک میں غیر قانونی تجارت کی روک تھام کیلئے اسلام آباد میں ایف بی آر اور آئی پی او کے درمیان معاہدے پر دستخط، چیئرمین ایف بی آر کا پہلی سہہ ماہی میں ٹیکس ہدف حاصل نہ کرنے کا اعتراف، دوسری سہ ماہی میں کسر پوری کرنے کا عزم ظاہر کر دیا۔ اسلام آباد میں ہونے والے معاہدے کے تحت پاکستان کسٹمز، انٹلیکچول پراپرٹی آرگنائزیشن کا ڈیٹا استعمال کر کے ملکی سرحدوں پر جعلی اور غیر رجسٹرڈ کمپنیوں کی نقل و حمل کو روکے گی۔ اس موقع پر چیئرمین ایف بی آر نے بتایا کہ دو کمیٹیاں ٹیکس معاملات کا جائزہ لے رہی ہیں، ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح صفر اعشاریہ تین فیصد برقرار رکھنے کی مدت میں توسیع کیلئے ای سی سی کو سمری بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ رواں مالی سال کی پہلی سہہ ماہی میں ٹیکس محاصل میں چالیس ارب روپے کا شارٹ فال رہا، چھ سو چالیس ارب روپے کے ہدف کے مقابلے میں چھ سو ارب روپے جمع کیئے گئے۔ دوسری سہہ ماہی میں ساڑھے سات سو ارب روپے کا ٹیکس ہدف حاصل کرلیا جائے گا۔ سماء

illegal

TAX

agreement

Tabool ads will show in this div