اسکول فیس میں رعایت کےخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ

بیس فیصدکمی کےحکومتی اعلان کو عدالت میں چیلنج کیاگیاتھا

سندھ ہائی کورٹ نےاسکول فیس میں 20 فیصد رعایت دینے کے خلاف درخواست پرفریقین کے دلائل مکمل ہونے کےبعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔

پیر کو سندھ ہائی کورٹ میں ایڈوکیٹ جنرل سندھ نے عدالت کو بتایا کہ کرونا وائرس ریلیف ایکٹ کے تحت دیا گیا ریلیف عارضی ہے،حالات بہترہونےپراسکول فیس میں دی گئی20 فیصد فیس وصول کی جائے گی۔

ایڈوکیٹ جنرل سندھ نےبتایا کہ حالات بہتر ہونے کے بعد ایک اورنوٹیفیکشن جاری ہوگا اور سندھ حکومت کی جانب سے 20 فیصد فیس وصولی کا طریقہ کار واضع کیا جائے گا۔

عدالت میں والدین کے وکیل محمد واؤڈاایڈوکیٹ نےایڈووکیٹ جنرل سندھ کے موقف کی مخالفت کی۔

محمد واوڈا ایڈوکیٹ کا کہنا تھا کہ قانون کے مطابق اسکول فیس میں 20 فیصد رعایت نا قابل وصولی ہے،والدین کو فیس میں دی گئی رعایت واپس نہیں لے جاسکتی،قانون میں ترمیم صرف اسمبلی ہی کرسکتی ہے،عدالت کو ترمیم کا اختیار نہیں ہے۔

واضح رہے کہ سندھ حکومت نے کرونا کے دوران اپریل میں اسکول فیس میں 20 فیصد کمی دینے کا اعلان کیا تھا۔اسکول فیس میں 20 فیصد کمی کے خلاف درخواست پرائیوٹ اسکولز کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔

SINDH HIGH COURT

School fee

Tabool ads will show in this div