کراچی:6سالہ بچی کا ریپ اورقتل،ملزمان کے ڈی این اے میچ کرگئے

دادا کاملزمان کو سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ
کراچی: پرانی سبزی منڈی میں قائم کچرا کنڈی
کراچی: پرانی سبزی منڈی میں قائم کچرا کنڈی
[caption id="attachment_2045716" align="alignright" width="800"] کراچی: پرانی سبزی منڈی میں قائم کچرا کنڈی[/caption]

کراچی ميں 6 سالہ بچی کو ریپ کے بعد قتل کرنے والے ملزمان فيض اور عبد اللہ کے ڈی این اے لاش کے نمونے سے میچ کر گئے، جب کہ ابتدائی طور پر حراست ميں ليا گيا نواز تفتيش ميں بے قصور ثابت ہوا ہے۔

بچی کے دادا نے ملزمان کو سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ کردیا۔ پولیس کے مطابق ملزم فیض نے نشے میں بچی کو اغوا کے بعد ریپ کیا۔ ملزم نے ریپ کے بعد عبد اللہ کو بلایا۔ عبد اللہ نے بچی کے مرنے کے بعد بھی اس کا ریپ کیا۔

پولیس کا مزید کہنا تھا کہ اتبداتی تفتش میں حراست میں لیا گیا ملزم نواز تفتیش میں بے قصور ثابت ہوا ہے۔ ملزم نواز کو ڈی این اے نیگیٹو آنے پر رہا کیا جائے گا۔ ملزمان کی گرفتاری پر بچی کے اہل خانہ کو اعتماد میں لیا گيا۔

ڈی آئی جی ایسٹ نعمان صدیقی نے بتایا کہ فیض محمد فیضو اور عبداللہ افغانی کو 14 ستمبر کو گرفتار کیا گیا تھا، جس کے بعد ان کے ڈی این اے کروائے گئے۔ ملزمان کے نمونے بچی کے کپڑوں سے حاصل کئے گئے۔ بچی کے کپڑوں اور لاش سے ملزمان کے فنگر پرنٹس بھی ملے تھے

واضح رہے کہ 5 سال کی بچی 5 ستمبر کو اپنے گھر سے چیز لینے نکلی اور لاپتا ہوگئی تھی، جس کے بعد 6 ستمبر کو اس کی لاش پرانی سبزی منڈی کے علاقے پير بخاری کالونی سے ملی تھی۔

Tabool ads will show in this div