کورنگی عمارت حادثہ:اموات 4 ہوگئیں

عمارت 4 منزلہ تھی

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/09/korangi-building.mp4"][/video]

کراچی میں کورنگی کراسنگ کے قریب واقع آبادی اللہ والا ٹاؤن میں جمعرات کی دوپہر 4 منزلہ رہائشی عمارت زمین بوس ہوگئی جس کے نتیجے میں 4 افراد جاں بحق ہوگئے جبکہ 7 افراد کو ملبے سے نکال کر اسپتال منتقل کردیا گیا۔

علاقہ مکینوں کے مطابق متاثرہ عمارت میں 15 سے 20 خاندان رہائش پذیر تھے۔

دیگر افراد کو نکالنے کیلئے ہیوی مشینری طلب کی گئی۔ انتظامیہ کے مطابق ملبے میں دبے افراد کی کل تعداد بتانا فی الحال ممکن نہیں۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی (ایس بی سی اے) کی ٹیکنیکل کمیٹی کو جائے حادثہ پر روانہ کردیا گیا۔

یہ رہائشی عمارت 240 گز کے پلاٹ پر تعمیر کی گئی تھی اور اس کے گرنے سے ملحقہ عمارتوں کو بھی نقصان پہنچنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

ایس بی سی اے حکام کے مطابق رہائشی عمارت رفاعی پلاٹ ایس ٹی 12 پر قائم تھی جو کہ کھیل کے میدان کے ایک حصے پر بنی ہوئی تھی اور کسی رفاعی پلاٹ کی نوعیت تبدیل کرتے ہوئے اس پر رہائشی یا کسی بھی اور مقصد کیلئے تعمیرات کرنا غیر قانونی ہے۔

یہ عمارت 4 برس قبل تعمیر ہوئی تھی جس میں 7 رہائشی ہونٹس تھے جن میں سے 4 میں لوگ کرائے پر رہتے تھے اور 3 یونٹس رہائشیوں کے ذاتی تھے۔ کرایہ داروں نے دیواروں میں دراڑیں پڑ جانے کے باعث اپنے گھر 2 روز قبل خالی کر دیے تھے۔

ڈی جی سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ افسران سے عمارت کی تمام تفصیلات طلب کرلیں۔ حکام کے مطابق عمارت کا پلان اور نقشہ پاس نہیں ہوا تھا۔

BUILDING

COLLAPSE