اوبر کا اپنی گاڑیاں الیکڑک کرنے کا اعلان

اوبر 80 کروڑ ڈالرز ڈرائیورز پر خرچ کریگا
[caption id="attachment_2036101" align="alignright" width="800"] فائل فوٹو[/caption]

معروف آئن لائن ٹیکسی سروس اوبر نے سال 2040 تک اپنی تمام گاڑیوں کو متبادل انرجی یعنی بجلی پر منتقل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اوبر ٹیکنالوجیز انکارپوریشن نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ اپنی تمام گاڑیاں الیکٹرک پر منتقل کرنے کے سلسلے میں سال 2025 تک 80 کروڑ ڈالر اپنے ڈرائیور پر خرچ کریں گے۔

اوبر کے مطابق کمپنی اپنے مقرر کردہ بجٹ کے ذریعے موجودہ گاڑیاں بیٹری سے چلنے والی گاڑیوں میں تبدیل کرے گی۔ اس سے قبل اوبر نے فروری میں کمپنی کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ اُس کے نیٹ ورک میں 50 کروڑ ڈرائیورز کام کر رہے ہیں۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ امریکا اور کینیڈا میں بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کے اوبر ڈرائیورز کو عام گاڑیوں کے ڈرائیورز کے مقابلے میں ہر ٹرپ پر ایک ڈالر اضافی ملے گا۔

اوبر کے اعلان کردہ حالیہ منصوبے کے بعد آٹو انڈسٹری میں بڑی تبدیلیاں متوقع ہیں اور خاص طور پر ان تبدیلیوں کی یورپ میں پیش گوئی کی جا رہی ہے۔ بجلی کی گاڑیوں کو چارجنگ فراہم کرنے والی عالمی کمپنیوں کے ساتھ بھی معاہدے کا پروگرام ہے تاکہ گاڑیوں کی چارجنگ کے مقامات میں بھی اضافہ کیا جاسکے۔

دوسری جانب امریکا میں اوبر کی حریف کمپنی لفٹ اس سے پہلے یہ اعلان کر چکی ہے کہ وہ اپنی تمام گاڑیوں کو 2030 تک بجلی سے چلنے والی گاڑیوں میں بدل دے گی۔

Tabool ads will show in this div