نئےآرمی چیف کو کئی محاذوں پر چیلنجز کا سامنا کرنا ہوگا، سیاسی رہنما

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی کے جانشین اور نئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف مختلف محاذوں پر کن چیلنجز کا سامنا ہوگا۔

سیاستدانوں کو یقین ہے کہ وہ اپنے تئیں بھر پور کوشش کریں گے۔ قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کہتے ہیں کہ نئے سپہ سالار کو نامساعد حالات کا سامنا ہوگا ' انہیں روایتی نہیں مسلم کمانڈر بن کر چیلنجز سے نمٹنا ہوگا۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کے چئیرمین مشاہد حسین سید کہتے ہیں کہ نئے آرمی سربراہ کو دہشت گردی کے خلاف جامع پالیسی تشکیل دینا ہو گی' سول ملٹری اور انٹر سروسز ریلیشنز بہتر بنانا ہوں گے۔

اے این پی کے حاجی عدیل احمد کا کہنا ہے کہ افغانستان سے نیٹو فورسز کے انخلاء کے بعد پاکستان کے مسائل میں اضافہ ہوگا ' نئے فوجی سربراہ کو دہشتگردی کی سرکوبی کرنا ہوگی۔ روبینہ خالد کے خیال میں نیا فوجی سربراہ جنرل کیانی کے جمہوریت دوست رویے کو جاری رکھے گا۔

حکمران جماعت کے سینیٹر جعفر اقبال کو خدشہ ہے کہ بعض عالمی طاقتیں پاکستان کو کمزور کرنا چاہتی ہیں' نئے آرمی چیف کو مشکل حالات کا سامنا ہوگا۔
سیاسی ماہرین کے مطابق نئے سپہ سالار کو چاہے کتنی بھی مشکلات در پیش ہوں ' اداروں میں پالیسیوں کا تسلسل برقرار رہے تو کامیابی قوم کے قدم چومتی رہے گی۔ سماء

کا

پر

چیف

کو

dialogues

woes

nbp

Tabool ads will show in this div