جب خودکشی کےسین میں اعجازاسلم کے گلے میں پھنداپھنس گیا

ڈرامہ "لوگ کیاکہیں گے"میں اداکار کے ساتھ کیاہوا
فائل فوٹو

اداکاراعجازاسلم کو ان کے آن ائرڈرامے " لوگ کیا کہیں گے" میں خودکشی کا ایک منظرفلمبند کرواتے ہوئے حقیقت میں پھندا لگ گیا تھا۔ اداکار نے اس حوالے سے اپنا تجربہ بتاتے ہوئے ڈپریشن کا شکار افراد کی مدد کرنے کا پیغام دیا ہے۔

ڈرامے کی وہ قسط آن ائرجاچکی ہے جس میں مالی مسائل اور پریشانیوں نے تنگ آکرحسیب کا کردار ادا کرنے والے اعجازاسلم موت کو گلے لگا لیتے ہیں۔

ٹوئٹرپراس سین کا ایک مختصرمنظر شیئرکرتے ہوئے اداکار نے لکھا " کل رات " لوگ کیا کہیں گے" میں حسیب کا سفراختتام کو پہنچا، اب جب میں الوداع کہہ چکا ہوں تو میں آپ سب سے کچھ شیئر کرنا چاہتا تھا کہ خودکشی کا یہ منظر فلمبند کرواتے ہوئے مجھے بہت تکلیف پہنچی۔ بیلٹ ٹوٹنے سے رسی میری گردن میں پھنس گئی"۔

اداکار کے مطابق " وہ چند سیکنڈز میرے لیے تباہ کن تھے، میرے پاؤں سُن ہوچکے تھے، گلا دب گیا تھا اورسرچکرا رہا تھا، میں چند ماہ تک کھانا تک نہیں نگل سکتا تھا۔ ان چند لمحات نے خودکشی کو میرے لیے حقیقی بنادیا اور مجھے حیرت ہے کہ یہ سب کرنےاوراپنے پیارے کو ہمیشہ کیلئے تکلیف میں چھوڑنے کیلئے کس کرب سے گزرنا ہوتا ہوگا ۔

ٹی وی پریہ منظرپورا نشرنہیں کیا گیا تاہم یو ٹیوب پر ڈرامہ دیکھنے والوں کیلئے خودکشی کا پورا سین شامل کیاگیا ہے۔

اعجاز اسلم نے اس ڈرامے میں الجھے مزاج کے حامل شخص حسیب کا مشکل کردارادا کیا ہے جو اپنی فیملی کی خواہشات اور ضروریات کی تکمیل کی خاطر کسی بھی حد تک جاسکتا ہے، ان کے مقابل مرکزی کردار میں صحیفہ جبار خٹک ہیں۔

اعجازاسلم اور صحیفہ کے علاوہ " لوگ کیا کہیں گے" کی کاسٹ میں فیصل قریشی ، سکینہ سموں، کنزہ رزاق، افشاں قریشی اورحمیرا ظہیرنمایاں ہیں۔

ڈرامے کے ہدایتکار محسن مرزا ہیں جبکہ اسے آئی ڈریم انٹڑٹینمٹ کے بینر تلے پیش کیا جا رہا ہے۔

Saheefa Jabbar Khattak

AIJAZ ASLAM

LOG KIA KAHENGE

Tabool ads will show in this div