پہلاقومی پرچم تیارکرنےوالےماسٹرالطاف کےاہل خانہ حکومتی دادرسی کےمنتظر

سرکاری سطح پران کےوالدکی خدمات کا اعتراف نہیں کیاگیا

پہلا قومی پرچم تیار کرنے والے مرحوم ماسٹر الطاف حسین کے اہل خانہ حکومتی سطح پر داد رسی نہ ہونے پر مایوس ہیں۔

پہلےقومی پرچم سازاورتحریک پاکستان کےسرگرم کارکن ماسٹرالطاف حسین کےانتقال کوکئی برس بیت چکے ہیں۔ان کےاہل خانہ کئی برس سے حیدرآبادمیں 3 کمروں پرمشتمل گھرمیں مقیم ہیں۔اس گھر میں اب ان کے بیٹےظہورالحسن کی رہائش ہے۔

ظہورالحسن کو شکوہ ہے کہ ایک تاریخی کام کرنے کے باوجود بھی سرکاری سطح پر ان کےوالد کی خدمات کا اعتراف نہیں کیا گیا۔ انھوں نے بتایا کہ ان کےوالد کی پرچم بنانے کی تصویرامریکہ کے ایک میگزین میں چھپی ہے،حکومت کو بھی کئی مرتبہ خطوط لکھےجاچکےہیں۔

ماسٹرالطاف حسین کےپڑپوتےنےمطالبہ کیا ہےکہ میرے پردادا نےپہلا قومی پرچم بنایا،سرکاری اعزاز سے نوازاجائے۔قومی پرچم کاڈیزائن امیرالدین قدوائی نے بنایا اور ماسٹر الطاف حسین نے تیار کیا۔

national flag

Tabool ads will show in this div