کراچی : ڈینگی کیسز گزشتہ 3 سالوں سے تجاوز، 26 افراد جاں بحق ہوچکے

اسٹاف رپورٹ


کراچی : کراچی ميں رواں سال ڈينگی کيسز کی تعداد گزشتہ 3 سال کی بلند ترين سطح پر پہنچ گئی ہے، ماہرين کہتے ہيں وائرس سے بچاؤ کیلئے فيومي


گيشن کی نہيں احتياط کی ضرورت ہے۔


ميڈيا کیلئے آگاہی پروگرام ميں آغا خان اسپتال کے ماہرين نے انکشاف کيا کہ مچھر مار اسپرے ڈينگی پر قابو پانے ميں بالکل ناکام ہے، کیونکہ اسپرے اس مچھر کا توڑ نہیں ہے۔


کراچی میں ڈینگی کے مرض پر قابو نہیں پایا جاسکا، روزانہ 8 سے دس افراد کو اسپتال لایا جارہا ہے جبکہ اب تک 26 افراد ڈینگی کے ہاتھوں جان کی بازی ہار چکے ہیں۔


ذرائع کے مطابق حکومتی سطح پر نگرانی کے فقدان کے باعث ڈینگی کے مرض کو پھیلنے سے روکنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔


ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ ڈينگی کے مريض کو جب تک منہ يا ناک سے خون بہنا شروع نہ ہوجائے، پليٹی ليٹس لگانے کی بھی ضرورت نہيں۔ 


ڈينگی سے بچاؤ کی کوئی ويکسين تيار نہيں کی جاسکی ہے، عوام احتیاطی تدابیر اپنا کر ہی اس موذی مرض سے جان بچا سکتے ہیں۔ سماء

burger

MQM

سے

Charlie Hebdo

android

Tabool ads will show in this div