بھارت خواتین کیلئے غیر محفوظ ترین ملک، مزید 2 بچیاں زیادتی کا شکار

Int India Rape Protest 1200 Pkg 19-10

[video width="640" height="360" mp4="http://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2015/10/Int-India-Rape-Protest-1200-Pkg-19-10.mp4"][/video]

نئی دہلی : پڑوسيوں کیخلاف سازشوں کے جال بُنے جارہے ہيں، اپنا ملک سنبھل نہيں رہا، جی ہاں بھارت خواتين کیلئے سب سے زيادہ غير محفوظ ملک بن گيا ہے، دارالحکومت نئی دہلی ميں مزيد 2 بچياں زيادتی کا نشانہ بنی ہيں، رواں سال ساڑھے 3 ہزار خواتيں کی عزتوں کو پامال کيا جاچکا ہے۔

بھارت کے بيمار معاشرے نے خواتين کی زندگی عذاب بنادی، دارالحکومت نئی دلی ميں 2 کمسن بچياں زيادتی کا شکار ہوئيں۔ انتظاميہ اور سرکار کيخلاف نعرے لگاتے مظاہرين پوليس ہيڈ آفس کے باہرجمع ہوگئے۔

رياست دہلی کے وزيراعلیٰ اروند کيجری وال نے زيادتی واقعات کا ذمے دار مودی حکومت کو قرار ديا۔ مظاہرين نے بھی حکومتی کارکردگی پر سوال اُٹھايا۔

سرمايہ کاريوں کی جنت کا دعويدار بھارت عورتوں اور اقليتوں کيلئے جہنم بن چکا ہے جہاں يکم جنوری سے اب تک 3500 خواتين زيادتی کا نشانہ بن چکی ہيں۔ سماء

بین الاقوامی

Girl rape case

AAP

Tabool ads will show in this div