اشتہارات میں کمیشن کا الزام:اجمل وزیر عہدے سے فارغ

کامران بنگش وزیراطلاعات مقرر

وزیراعظم عمران خان کے حکم پر مشیر اطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے مبینہ آڈیو ریکارڈنگ سامنے آنے پر مشیر اطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیر کو عہدے سے فوری طور پر ہٹانے کا حکم دے دیا، جس کے بعد معاون خصوصی کامران خان بنگش کو محکمہ اطلاعات کا قلمدان سونپ دیا گیا ہے۔

اجمل وزیر کو عہدے سے ہٹانے کا اعلامیہ بھی جاری کردیا گیا ہے۔ اجمل وزیر کی جگہ معاون خصوصی کامران خان بنگش کو محکمہ اطلاعات کا قلمدان دے دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ اجمل وزیر کی کمیشن لینے کے حوالے سے آڈیو ریکارڈنگ منظر عام پر آئی تھی۔

ریکارڈنگ کے دوران اجمل وزیر اور اشتہاری ایجنسی کے مالک کے درمیان کمیشن کی ڈیل ہوئی تھی، آڈیو سامنے آنے پر وزیراعظم عمران خان نے تمام ثبوتوں کے بعد اجمل وزیر کو ہٹانے کا حکم دیا۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا نے چیف سیکریٹری کو معاملے کی تحقیقات کا حکم بھی دے دیا۔

نئے مشیر اطلاعات کامران بنگش کا کہنا ہے تمام معاملات سے وزیراعظم عمران خان کو بھی مطلع کردیا گیا ہے۔ اُن کا کہنا ہے کہ اشتہاری ایجنسی سے کمیشن لینے کی کچھ چیزیں سامنے آئی ہیں جس کی فرانزک تحقیقات کی جائیں گی۔

خیبر پختونخوا کے انتظامی محکمے نے ہفتے کو دو علیحدہ علیحدہ اعلامیے جاری کیے ہیں۔ ایک اعلامیے میں اجمل وزیر کی جگہ کامران بنگش کو اضافی ذمے داریاں دینے سے متعلق ہے جب کہ دوسرے اعلامیے میں اجمل وزیر کے خلاف تحقیقات شروع کرنے سے متعلق احکامات درج ہیں۔

واضح رہے کہ اجمل وزیر کا تعلق جنوبی وزیرستان سے ہے اور ان کا شمار پاکستان تحریک انصاف کے سابق مرکزی سیکریٹری جنرل جہانگیر ترین کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے۔ حالیہ عرصے میں صوبہ خیبرپختونخوا کی حکومت کو ترقیاتی منصوبوں بشمول میٹرو بس منصوبے کی تکمیل میں تاخیر پر تنقید کا بھی سامنا رہتا ہے۔

PTI

Ajmal Wazir

Tabool ads will show in this div