بلغراد:سربیامیں لاک ڈاؤن کاسرکاری اعلان،عوام مشتعل،مظاہرے

تیرہ افرادزخمی
Jul 09, 2020
Protestors clash with police in Belgrade on July 8, 2020 as violence erupts against a weekend curfew announced to combat a resurgence of COVID-19 infections despite Serbia's President Aleksandar Vucic saying that the weekend curfew is likely to be scrapped. - Chaotic scenes rocked Belgrade on July 7 at night after thousands of people streamed into the city centre to protest the president's announcement that authorities would reimpose a round-the-clock weekend lockdown. Around 20 people were arrested and dozens were
Protestors clash with police in Belgrade on July 8, 2020 as violence erupts against a weekend curfew announced to combat a resurgence of COVID-19 infections despite Serbia's President Aleksandar Vucic saying that the weekend curfew is likely to be scrapped. - Chaotic scenes rocked Belgrade on July 7 at night after thousands of people streamed into the city centre to protest the president's announcement that authorities would reimpose a round-the-clock weekend lockdown. Around 20 people were arrested and dozens were

سربیا میں حکومت کی جانب سے کرونا کے پھیلاؤ کو کم کرنے کے لیے ملک میں دوبارہ لاک ڈاؤن کے اعلان پر شہری مشتعل ہوگئے اور پارلیمنٹ کا گھیراؤ کرلیا۔

غیرملکی خبرايجنسی کے مطابق مشرقی یورپ کےملک سربیا میں گذشتہ روز صدرکی جانب سےدارالحکومت بلغراد میں 5 سے زیادہ افراد کےاجتماع پر پابندی اور جمعے سے  پیر تک  کرفیو کا اعلان کیا تھا۔

حکم نامے کو ملک کے دیگر شہروں میں بھی نافذ کرنے کا اشارہ دیا گیا تھا۔ سربین صدرکےاعلان کے بعد شہری مشتعل ہوگئے اورسڑکوں پراحتجاج کرتے ہوئےمظاہرے شروع کردئیے۔

ہزاروں مظاہرین نےدارالحکومت بلغراد میں پارلیمنٹ کا گھیراؤ کیا اور پارلیمنٹ کی عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کی جس پرپولیس نے احتجاجی مظاہرین کومنتشر کرنے کےلیےآنسو گیس کا استعمال کیا۔

مظاہرین اورپولیس کےدرمیان جھڑپوں میں 12 افراد زخمی ہوگئے۔

Tabool ads will show in this div