وباسےنمٹنےکیلئےمشترکہ حکمت عملی اپنانی ہوگی،وزیراعظم

اسمارٹ لاک ڈاؤن کا فیصلہ بہترین تھا

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کرونا وبا سے بچاؤ کیلئے مشترکہ حکمت عملی اپنانا ہوگی، لاک ڈاؤن ہوتے ہی مزدور طبقہ بیروزگار ہوگیا، حتمی طور پر یہ کوئی نہیں کہ سکتا کہ معیشت کب سنبھلے گی۔

انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن کے زیراہتمام عالمی فورم سے خطاب میں پاکستانی وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پوری دنیا میں مزدوروں کیلئے مشکل وقت ہے، کچھ ممالک میں کرونا وائرس مسلسل بڑھ رہا ہے۔ لاک ڈاؤن نے سب سے زیادہ مزدوروں کو متاثر کیا۔ لاک ڈاؤن ہوتے ہی متوسط طبقہ بے روزگار ہوگیا۔ ہمیں اس بحران سے نکلنے کیلئے اور وبا سے نمٹنے کیلئے مشترکا حکمت عملی بنانا ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے اجتماعات، اسکولز اور کالجز پر بھی پابندی لگائی۔ ہمارے پاس محنت کش طبقے کا ریکارڈ بھی موجود نہیں۔ ہم نے چھوٹے طبقے کیلئے کیش پروگرام بھی شروع کیا۔ پاکستان میں کبھی اتنی بڑی کیش گرانٹ نہیں دی گئی۔ دُعا کرتے ہیں کہ ویکسن آئے تاکہ کرونا پر قابو پاسکے۔

اس موقع پر انہوں نے یہ بھی کہا کہ لاک ڈاؤن میں خوراک کی ضرورت پورا کرنا مشکل ہوگیا۔ مشکلات کو دیکھتے ہوئے اسمارٹ لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا۔ تعمیرات، زراعت جیسے شعبوں کو بند نہیں کیا۔ بھارت نے کرفیو لگایا جس سے بے روزگاری میں اضافہ ہوا۔ خطاب کے آخر میں ان کا کہنا تھا کہ دیگر ممالک کو اپنے اقدامات سے آگاہ رکھیں گے، آئیڈیاز کے تبادلوں سے بہت مدد ملے گی۔

IMRAN KHAN

SMART LOCKDOWN

Tabool ads will show in this div