تحریک انصاف، پیپلزپارٹی کےالیکٹرک سےمالی فوائد حاصل کرتےہیں، نعیم الرحمٰن

مارچ میں 26ارب روپے کی ایڈوانس سبسڈی دی گئی
Jun 24, 2020

بدترين کارکردگی کے باوجود کے اليکٹرک کے خلاف کوئی کارروائی نہ کرنے پر جماعت اسلامی کراچی کے امير حافظ نعيم الرحمن نے تحريک انصاف اور پيپلز پارٹی پر مالی فوائد اٹھانے کا الزام لگا ديا۔

پروگرام نیا دن میں گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی نے کہا کہ جون کا بجٹ آنا تھا ليکن مارچ ميں کے اليکٹرک کو 26 ارب روپے کی ايڈوانس سبسڈی دے دی گئی۔

انہوں نے سوال اٹھایا کہ طلب تين ہزار جبکہ 3400 ميگاواٹ بجلی موجود ہے مگر پھر لوڈ شيڈنگ کيوں؟ کے اليکٹرک پر نوازشيں کيوں؟

حافظ نعيم الرحمٰن نے کہا کہ پلانٹ کو آئل پر چلانے، تین سال ميں 31 ملين ڈالر کی سرمايہ کاری اور 1300 ميگاواٹ بجلی اضافہ کرنے کا معاہدہ کہاں گيا؟

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ یہ ادارہ کھربوں روپے کھا گيا جبکہ 35 سے 40 ارب روپے نيشنل گرڈ سے ملنے والی سستی بجلی سے کماتے ہيں۔ 2005 ميں جب کے ای ايس سی تھا تو اس ادارے کو ڈيڑھ ارب روپے کي سبسڈی ملتی تھی لیکن اب ہوا يہ کہ 20 ارب سے 25 ارب روپے تک سبسڈی کے اليکٹرک کو دی گئی ہے جو پرائيوٹ کمپنی کے طور پر کام کرتی ہے سرکاريلی کمپنی نہيں ہے، یہ منافع کماتی ہے۔

Hafiz Naeem ur Rehman

NAYA DIN

Tabool ads will show in this div