اسٹیل ملزملازمین کیس،سندھ ہائیکورٹ میں ملازمین کی بدنظمی،عدالت برہم

درخواست گزارچاہيں توہائيکورٹ کافيصلہ سپريم کورٹ ميں چيلنج کرسکتےہيں
Jun 23, 2020

سندھ ہائیکورٹ ميں پاکستان اسٹیل ملزکے ملازمین کوفارغ کرنےکےکيس کی سماعت کےموقع پرعدالت نے اسٹیل مل ملازمین کو کمرہ عدالت سے باہر نکال دیا۔

منگل کوسندھ ہائیکورٹ میں پاکستان اسٹیل ملزملازمین کوفارغ کرنےکےکيس کی سماعت ہوئی۔اسٹیل مل ملازمین نےعدالت سے استدعا کی کہ یہ9ہزارملازمین کےمستقبل کا سوال ہے۔ عدالت میں شور شرابا بڑھا تو جسٹس عمرسیال نےبرہمی کا اظہار کیا  اور ریمارکس دئیے کہ یہ تمہارا سی بی اے نہیں ہے،اس طرح بات کروگےتوجیل جاؤ گے۔جسٹس عمرسیال نے مزید کہا کہ تم لوگوں نے جو اسٹیل ملز کا حال کیا وہ سب کو معلوم ہے۔ جسٹس عمرسیال کےحکم پراسٹیل مل ملازمین کوکمرہ عدالت سے باہر نکال دیا گیا۔

اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ یہ کیس سپریم کورٹ میں زیرسماعت ہے،سندھ ہائیکورٹ کیس نہیں سن سکتی۔ اسٹیل ملزملازمین کے وکیل عباس ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ سپريم کورٹ ميں نجکاری نہيں بلکہ ملازمين کی ترقی کا کيس زيرِسماعت ہے

جسٹس عمر سیال کا کہنا تھا کہ درخواست گزارچاہيں توہائيکورٹ کافيصلہ سپريم کورٹ ميں چيلنج کرسکتےہيں۔عدالت نے درخواست کی غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی۔

SINDH HIGH COURT

Tabool ads will show in this div