کراچی جیل میں باصلاحیت قیدی نے سنیٹائزیشن گیٹ بنادیا

فالتو اشیا استعمال کی گئیں
کراچی سینٹرل جیل میں 15 سال سے سزا کاٹنے والے قیدی نے دیگر قیدیوں کو کرونا وائرس سے بچانے کے لئے پرانے سامان سے سینیٹائزیشن گیٹ تیار کرلیا جس پر صرف 3 ہزار روپے خرچ ہوئے ہیں۔ جیل انتظامیہ کے مطابق جمیل نامی قیدی اغوا برائے تاوان کیس میں سزا کاٹ رہے ہیں۔ حالیہ دنوں میں قیدیوں کی بڑی تعداد کرونا وائرس میں مبتلا ہوئی جس پر جمیل نے اپنا ٹیلنٹ دکھانے کا فیصلہ کیا اور پرانی اشیا استعمال کرتے ہوئے ساتھی قیدیوں کیلئے سینیٹائزیشن گیٹ بنادیا۔ حکام کے مطابق گیٹ کیلئے بازار سے محض3 ہزار روپے کا سامان خریدنا پڑا۔ اس کے علاوہ پرانے فرج کا کمپریسر اور چولے کے وال استعمال کیے گئے۔

inmate

Tabool ads will show in this div