سندھ نے تعلیم کا بجٹ بڑھاکر 244 ارب کردیا

نئے مالی سال کا بجٹ پیش
Jun 17, 2020

سندھ حکومت نے مالی سال 2020-21  کے لیے تعلیم  کا بجٹ بڑھا کر 244.5  ارب روپے کر دیا ہے۔ گزشتہ برس تعلیم کا بجٹ 212.4  ارب روپے تھا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے بجٹ تقریر میں کہا کہ  وسائل  کی کمی کے باوجود ہم نے تعلیم کیلئے صوبے کی آمدن 25.2 فیصد مختص کیا ہے اور ترقیاتی منصوبوں میں تعلیم کیلئے مجموعی طور پر 21.1 ارب روپے مختص رکھے گئے ہیں۔

بجٹ کے مطابق ترقیاتی بجٹ کے ساتھ ساتھ ایف پی اے کے تحت بھی تعلیم کیلئے 3.1  ارب  روپے بھی مختص کیے گئے ہیں۔ محکمہ اسکول ایجوکیشن اینڈ لٹریسی  نے 265  جاری  اسکیموں اور 4 نئی اسکیموں کے  لیے 13.2 ارب روپے مختص کیے ہیں۔  زیادہ تر اسکیمیں  موجودہ سرکاری اسکولوں کو پرائمری سے سیکنڈری کی سطح پر اپ گریڈ کرنے کے لیے ہیں۔

اسکولوں کی بحالی اور بہتری، فرنیچر کی فراہمی، بنیادی اور غیر موجودہ سہولیات  کی فراہمی، اسکولوں کی عمارتوں کی تعمیر نو ترجیحات میں شامل ہیں۔ محکمہ کالج ایجوکیشن  کے لیے سالانہ ترقیاتی  پروگرام 2020-21  میں 67  جاری  اور 2  نئی اسکیموں کے لیے 3.71 ارب روپے مختص کرنے کی تجویز ہے۔

 یونیورسٹیوں اور بورڈز کی ترقیاتی ترجیحات کے لیے 3.3 ارب روپے اور سرکاری  یونیورسٹیوں، ان کے تعلیمی بنیادی ڈھانچے کو مضبوط  بنیادوں پر تشکیل دینے  اور نئی تعلیمی سہولیات کی تعمیر کے لیے بھی فنڈز فراہم کیے جائیں گے۔

Tabool ads will show in this div