بجلی صارفین پر پھر مہنگائی کی تلوار لٹکنے لگی

چیئرمین نیپرا نے خطرے کی گھنٹی بجادی

چئیرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی نے خبردار کیا ہے کہ پاور سیکٹرکو سبسڈی نہ دی گئی تو بجلی کی قیمت میں اضافہ ہوگا۔ کرونا وائرس کی وجہ سے توانائی سیکٹر مالی دباؤ کا شکار ہے۔ صارفین سے بل نہ لینے کی پالیسی سے تقسیم کار کمپنیوں کی وصولیاں بھی کم ہوگئیں۔

آن لائن سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین نیپرا نےب جلی کمپنیوں پر مالی دباؤ بڑھنے کی وجہ حکومتی پالیسی قرار دیتے ہوئے کہا کہ دو ماہ میں بعض کمپنیوں کی وصولیاں 40 فیصد کی کم ترین سطح پر آگئیں۔ گھریلو صارفین سے بل نہ لینے کی حکومتی پالیسی سے دباؤ بڑھ رہا ہے۔ کرونا کی وجہ سے کمرشل اور صنعتی سرگرمیاں محدود ہیں، وصولیوں میں کمی ہو رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کمرشل سرگرمیاں کم ہونے سےآئی پی پیز کو واجب الادا فکس چارجز بھی بڑھیں گے اور فکس چارجز کپیسٹی پے منٹس میں اضافہ ہو گا۔ اس سے یا تو ٹیرف میں اضافہ ہوگا یا حکومت کو سبسڈی دینا پڑے گی۔

چئیرمین نیپرا نے مزید کہا کہ صارفین کے تحفظ کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے تاہم سبسڈی دینے یا نہ دینے کا فیصلہ حکومت نے کرنا ہے۔

Power Tariff

Tabool ads will show in this div