نارتھ کراچی،گھرمیں آگ لگنےسے3 بچے جھلس گئے

مکانات کےاوپربجلی کےتارگزررہےہیں

نارتھ کراچی کے علاقہ بلال کالونی میں گھر کی چھت سے گزرتی 132 کے وی کی لائن کی وجہ سے گھر میں آگ لگنے سے بچہ جھلس گیا۔ پولیس نے بتایا کہ بچہ چھت پر کبوتر اڑا رہا تھا کہ اچانک آگ لگ گئی۔ کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ کےوی132 لائن کے نیچے آبادی خطرناک حد تک تجاوزکرگئی ہے،متعلقہ ادارے نوٹس لیں۔

نارتھ کراچی بلال کالونی کے گھروں کے اوپر سے بجلی کی ایک سو بتیس کے وی کی لائن گزر رہی ہے۔ منگل کو ہونے والے واقعے میں انہی گھروں میں سے ایک گھرکی چھت پر بچہ کبوتر اڑانے گیا اوراس دوران اچانک گھر میں آگ بھڑک اٹھی۔جھلسنے والے بچےکونکالنےکی کوشش کرنے والے مزید 2 بچے بھی معمولی زخمی ہوئے۔

کےالیکٹرک کی ٹیم نےجائےحادثہ کا دورہ کرکےمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ لائن پہلے سے گزررہی ہے گھروں کی تعمیر بعد میں ہوئی جوکہ نہیں ہونی چاہیے تھی۔ پولیس اور کے الیکٹرک کی ٹیمیں واقعے کی مزید تفتیش کررہے ہیں۔

بدھ کو کےالیکٹرک کی جانب سے بلال کالونی کے افسوسناک واقعہ پر وضاحتی بیان جاری کردیا گیا ہے۔ کے الیکٹرک نے بتایا کہ کرنٹ لگنے کا واقعہ بلال کالونی میں پیش آیا جو کے الیکٹرک کے کے وی 132 ٹرانسمیشن نیٹ ورک کے نیچے خطرناک انداز میں تجاوزکرگئی ہے۔

حادثے کی رپورٹ ملتے ہی کےالیکٹرک کی ٹیمیں فوری طور پر جائے حادثہ پر پہنچیں اور اِس بات کا یقینی بنایا کہ پاور یوٹیلیٹی کا ٹرانسمیشن نیٹ ورک درست حالت میں ہے اور متعلقہ علاقے میں کے الیکٹرک کا کوئی وائر ٹوٹنے کا واقعہ پیش نہیں آیا۔

دستیاب معلومات کے مطابق، حادثے کی بنیادی وجہ تجاوزات کی صورت میں موجود رہائشی عمارت ہے جو کے الیکٹرک کے انفرااسٹرکچر سے کم سے کم محفوظ فاصلے کی بنیادی ضرورت کی خلاف ورزی کرتے ہوئے تعمیر کیا گیا ہے۔ لہٰذا، اس صورتحال میں عمارت کے مکینوں کو ممکنہ طور پر خطرات لاحق ہیں۔

کے الیکٹرک اِس حادثے پر دلی افسوس کا اظہارکرتا ہے اور ذمہ دار حکام پر زور دیتا ہے کہ بے ہنگم تعمیرات اور تجاوزات کے باعث بجلی کے نیٹ ورک کودر پیش خطرات میں اضافے کا سد باب کریں۔

 اِس سلسلے میں، کے الیکٹرک سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سمیت متعدد سرکاری اداروں کو مراسلات لکھ چکا ہے جن میں ایسے علاقوں کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں غیر قانونی طور  اور تحفظ کے بنیادی قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کرتے ہوئے، تعمیرات کی گئی ہیں،جو عوامی تحفظ کے لیے نہایت تشویش ناک ہیں۔

Tabool ads will show in this div