جماعت اسلامی کے القاعدہ اور طالبان سے رابطے ہیں، الطاف حسین کا پابندی کا مطالبہ

اسٹاف رپورٹ


متحدہ کے قائد الطاف حسین جماعت اسلامی اور اسلامی جمعیت طلبہ پر برس پڑے، ایم کیو ایم کے قائد نے الزام عائد کیا کہ جماعت اسلامی کی ہائی کمان کے تانے بانے القاعدہ اور طالبان سے جُڑے ہیں، انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ملک دشمن جماعت پر فی الفور پابندی لگائی جائے، ایم کیو ایم کے قائد نے یہ بھی واضح کردیا کہ معاملات اُن کے ہاتھ سے نکل گئے تو پھر کوئی بھی سنبھال نہیں سکے گا۔


لال قلعہ گراؤنڈ میں جنرل ورکرز اجلاس سے خطاب میں ایم کیو ایم کے قائد کا یہ بھی کہنا تھا کہ حکیم اللہ محسود کا امیر جماعت اِسلامی منور حسن سے بھی رابطہ تھا، بولے ایک طرف کراچی میں آپریشن کی وجہ سے ایم کیو ایم کے لاکھوں کارکناں گھروں میں نہیں سو پارہے جبکہ لاہور میں شراب کی بوتلوں اور اسلحہ کیساتھ گرفتار کئے جانیوالے جمعیت کے کارکنوں کو اگلے ہی دن چھوڑ دیا جاتا ہے۔


الطاف حسین نے کہا ایم کیو ایم کو کمزور نہ سمجھیں، مہاجروں سے امتیازی سلوک نہ کیا جائے، اُن کی جماعت نے آج تک علیحدگی کا نعرہ لگایا، نہ لگانا چاہتی ہے۔


الطاف حسین نے یہ بھی بتایا کہ کراچی کے پوش علاقوں میں القاعدہ اور طالبان کے لوگ چھپے ہیں، ایم کیو ایم غیرمشروط طور پر ملک کو دہشتگردوں سے پاک کرنے کیلئے تیار ہے، انہوں نے آخر میں فوج اور عسکری اداروں کو بھی پیغام دے دیا۔ سماء

اور

کے

کا

rizvi

سے

PAT

child marriage

Malaysia

Tabool ads will show in this div