ارطغرل نے"میرے پاس تم ہو"کی ٹیم کوپھراکٹھاکردیا

ڈرامہ "میرے پاس تم ہو" کی ٹیم ایک بار پھراکٹھی

سماء ڈیجیٹل

ترکی کا "گیم آف تھرونز" کہلانے والا تاریخی ڈرامہ سیریل ارطغرل پاکستان میں نشر کیے جانے کے ساتھ ہی مقبولیت کی انتہاؤں کو چھورہا ہے۔ ایسے میں پاکستان کی جانب سے بھی تاریخی ہیرو پر بین الاقوامی سطح کی ڈرامہ سیریل بنانے کی خبرسامنے آئی ہے۔

ارطغرل، وزیراعظم عمران خان کی خواہش پراردو زبان میں ڈب کر کے یکم رمضان سے سرکاری ٹی وی پرنشرکیا جارہا ہے، جس میں 13 ویں صدی میں سلطنت عثمانیہ کےقیام سے قبل اسلامی فتوحات کا سلسلہ دکھایا گیا ہے۔

لیکن تعریف ہو یا ٹرولنگ ، پاکستانی شائقین کبھی مایوس نہیں کرتے۔ اسی لیے ارطغرل کی بےپناہ تعریفوں کے درمیان یہ بھی کہا گیا دوسرے ممالک کی پروڈکشنزدکھانے کے بجائے ہمیں اپنے ہیروزکو سامنےلانا چاہیے۔ایسے میں معروف مصنف خلیل الرحمان قمرکی جانب سے تاریخی سیریل لکھنے کی خبرسامنے آئی ہے۔

سماء ڈیجیٹل کی جانب سے رابطہ کرنے پرخلیل الرحمان قمرنے کہا "ہم نے اسلامی تاریخ کے ایک بڑے ہیرو سے متعلق سیریل بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ میں اس حوالے سے مختلف کتابوں کا مطالعہ کررہا ہوں اور ایک ہفتے میں لکھنے کا آغاز کردوں گا"۔

ڈرامہ "میرے پاس تم ہو" کی ٹیم پھرایک ساتھ

مقبول ترین ڈرامہ سیریل "میرے پاس تم ہو" کی ٹیم ایک بار پھراکٹھی ہونے جارہی ہے۔ خلیل الرحمان قمرکے مطابق وہ پروڈکشن ہاؤس سکس سگما اسے پروڈیوس کرے گا جبکہ ڈائریکٹرندیم بیگ ہوں گے۔ مرکزی کردار ہمایوں سعید ادا کریں گے۔

خلیل الرحمان نے کہا کہ یہ سیریل بڑے پیمانے پرانٹرنیشنل اسٹینڈرڈکومدنظررکھتے ہوئے بنائی جائے گی، جس کا نام فی الحال نہیں بتایا جاسکتا۔ ہم سب ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں اس حوالے سے اعلان کریں گے، یہ سیریل ایک بہت بڑے نام پربنائی جا رہی ہے اور ہمارے کام کو ہرمسلمان سراہے گا۔ اس میں کسی قسم کا فکشن شامل نہیں ہوگا ۔

ارطغرل بنانے والوں اور طیب اردوان کو سیلیوٹ

پاکستان میں دکھانے جانے والے تُرک ڈرامےپراظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا "میں ارطغرل بنانے والوں اور طیب اردوان کو سیلیوٹ پیش کرتا ہوں، اس کے ساتھ ساتھ عمران کو بھی سراہتا جو چاہتے تھے کہ قوم یہ دیکھے، ارطغرل مسلمانوں کا ہیرو تھا جس کے حوالے سے سیریل ترکی بنائے یا کوئی اور ملک، ہیرو تبدیل نہیں ہوتے"۔

ڈرامہ "میرے پاس تم ہو" کے مصنف نے مزید کہا ، یہ وقت ہے کہ ہم اپنے ہیروزکو نئی نسل کے سامنے متعارف کروائیں جنہیں علم نہیں کہ ان کے وہ کون تھے اوراس کے بجائے دوسرے حتیٰ کہ دشمن ممالک کے ہیروزکا تعارف ان سے کروایا جارہا ہے، میں اس حوالے سے فکرمندہوں ۔

خلیل الرحمان قمر نے مزید کہا کہ یہ بہت بڑاپراجیکٹ ہے اس لیے حالات کومدنظررکھنا ہوگا، ابھی یہ کہنا قبل ازوقت ہے کہ ہم پریس کانفرنس کب کریں گے۔ فی الحال میں لکھنے کا آغازکررہا ہوں اور آنے والے دنوں میں حالات کا جائزہ لینے کے بعد فیصلہ کیا جائے گا کہ ہم اس حوالے سے باضابطہ پریس کانفرنس کب کریں گے۔

شان کے موقف کو غلط سمجھا گیا

حال ہی میں اداکارشان نے پاکستان میں دوسرے ممالک کی پروڈکشنز دکھانے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا "ہمیں اپنے ہیروز تلاش کرنے چاہئیں"۔ اس حوالے سے سوال پرخلیل الرحمان نے جواب دیا کہ میری ان سے تفصیلی بات ہوئی ہے ، شان کے موقف کو مکمل طور پرغلط سمجھا گیا۔ وہ کسی طرح سے بھی ارطغرل کیخلاف نہیں لیکن یہ چاہتے ہیں کہ ترکی یا کسی دوسرے ملک کی سیریل کے بجائے ہم خود کیوں نہیں بناتے جس میں ہمارے اداکار کام کریں۔ شان صرف اتنا چاہتے ہیں کہ ڈرامہ ڈب کرکے دکھانے کے بجائے ترکی کی طرح ہم خود تاریخی سیریل بنائیں۔

ارطغرل کو پاکستان میں دکھائے جانے سے قبل مخلتف زبانوں میں ڈبنگ کے بعد دنیا کے 60 ممالک میں دکھایا جاچکا ہے۔ اس کے 5 سیزن ہیں۔ یہ نیٹ فلیکس پرترکش زبان میں انگریزی سب ٹائٹلزسمیت کئی آن لائن اسٹریمنگ چینلزپرموجود ہے۔

Humayun saeed

KHALIL UR REHMAN QAMAR

ERTUGRUL

Tabool ads will show in this div