عمراکمل پر3سالہ پابندی برقرار،تفصیلی فیصلہ جاری

معطلی کی سزا شامل نہيں

ٹیسٹ کرکٹرعمراکمل کيس کا تفصيلی فيصلہ جاری کردیا گیا ہے۔بلے باز پر 3 سال کی پابندی کو برقرار رکھا گیا ہے۔

میچ فکسنگ کیس میں عمراکمل کو سنائی گئی سزا میں 3 سال کی پابندی ميں معطلی کی سزا شامل نہيں۔عمراکمل کیس کے تفصیلی فیصلے میں 3 سال کی پابندی برقرار رکھی گئی ہے۔

فیصلے میں بتایا گیا ہے کہ عمر اکمل نہ تو ندامت کے خواہاں ہے اورنہ ہی معافی مانگنے کو تيار ہیں،عمراکمل اپنی ذمہ داریاں نبھانے میں ناکام رہے۔ تفصيلی فيصلے کےمطابق عمراکمل 19 فروری 2023 تک کرکٹ کی تمام سرگرميوں سے دور رہيں گے۔ فیصلے میں بتایا گیا ہے کہ عمراکمل پابندی کے خلاف 14 روز میں اپیل کرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ رواں برس پاکستان سپر لیگ کے پانچویں سیزن کے دوران بکی سے ملاقات اور پھر معلومات چھپانے پر کرکٹر عمراکمل پر تین سال کی پابندی عائد کی گئی ۔کیس کی سماعت کے دوران عمراکمل اور پی سی بی کے قانونی مشیر تفضل رضوی ڈسپلنری پینل کے روبرو پیش ہوئے۔ تفضل رضوی نےعمر اکمل پرالزامات کی تفصیلات بتائیں، عمراکمل نے بھی اپنا موقف پیش کیا۔

دونوں کا موقف سننے کے بعد پینل کے سربراہ جسٹس میراں چوہان نے عمر اکمل پر تین سال کی پابندی کا فیصلہ سنایا۔

عمراکمل کو پی ایس ایل سیزن 5 کےآغازسےچند دن گھنٹےقبل اینٹی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی پرمعطل کیا گیا تھا۔مڈل آرڈر بیٹسمین پر بکی سے ملنے اورمعلومات چھپانے کے الزامات تھے۔

Tabool ads will show in this div