سعودی عرب: تمام شہروں میں جزوی طورپرکرفیواٹھانےکافیصلہ

اطلاق آج اتوار 26 اپریل سے ہوگا
المرور السعودي : بكامل جاهزيتنا.. ‏نقف جميعًا للحفاظ على صحتك .. 1441-08-14 هـ(واس)
المرور السعودي : بكامل جاهزيتنا.. ‏نقف جميعًا للحفاظ على صحتك .. 1441-08-14 هـ(واس)

سعودی حکومت نے ملک کے تمام شہروں سے جزوی طور پر کرفیو ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے ملک بھر میں جزوی طور پر کرفیو اٹھانے کا فرمان جاری کیا گیا، جس پر عمل درآمد آج اتوار (26 اپریل) سے ہوگا۔

شاہی فرمان کے مطابق صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک لوگوں کو گھروں سے نکلنے کی اجازت ہوگی۔ شاہ سلمان نے ہدایت جاری کی ہے کہ اتوار26 اپریل سے13 مئی تک مملکت کے تمام علاقوں میں کرفیو صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک جزوی طور پر ختم کردیا جائے گا۔

شاہی فرمان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مکہ مکرمہ اور مکمل لاک ڈاؤن والے علاقوں میں 24 گھنٹے کا کرفیو تاحال برقرار رہے گا۔ مزید اقتصادی اور تجارتی سرگرمیوں کی بھی اجازت دی گئی ہے، اس پر عمل درآمد 29 اپریل سے 13 مئی تک ہوگا۔ سعودی بادشاہ کے حکم میں ریٹیل کی دکانیں، شاپنگ مالز اور تجارتی مراکز کھولنے کی اجازت بھی دے دی گئی ہے۔ تمام مراکز میں سماجی دوری کی شرط پر عملدرآمد لازمی ہوگا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ تجاری مراکز میں ایسی اقتصادی سرگرمیوں کی اجازت نہیں ہوگی جہاں سماجی دوری پر عمل درآمد ممکن نہ ہو مثلا باربر شاپس ، بیوٹی پالرز، اسپورٹس کلب، ہیلتھ کلب، سینما گھر، تفریحی مراکز، ریسٹرنٹس اور قہوہ خانوں پر پاپبندی بر قرار رہے گی۔ ٹھیکیداروں اور فیکڑیوں کو 29 اپریل سے 13 مئی تک بلا قید و شرط کام کرنے کی اجازت بھی دی گئی ہے۔

جزوی کرفیو اٹھائے جانے کے دوران سماجی دوری کی شرط پر عملدرآمد ضروری ہوگا۔ 5 افراد سے زیادہ شادی کی تقریبات، تعزیتی اجتماع اور بپلک مقامات پر سماجی دوری کی شرط پر عمل درآمد جاری رکھا جائے گا۔ بیان کے مطابق مقررہ قواعد وضوابط کی پابندی نہ کرنے والے ادارے بند کردیئے جائیں گے اور سخت سزائیں دی جائیں گی۔ مقررہ مدت کے دوران صورت حال کا مسلسل جائزہ لیا جاتا رہے گا۔

SAUDIA ARAB

Tabool ads will show in this div