مقبوضہ کشمیر اسمبلی میں بی جے پی ارکان کی غنڈہ گردی

indian-mp

سری نگر: مقبوضہ کشمیراسمبلی میں شدید ہنگامہ آرائی کے دوران اراکین آپس میں گتھم گتھا ہوگئے جس میں بی جے پی ارکان نے ایم ایل اے رشید انجینئر کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔

خود کو سيکولر ملک کہلوانے والي بھارتي حکومت کا چہرہ بے نقاب ہوگيا۔ نام نہاد مقبوضہ کشمير اسمبلي ميں مسلم رکن کو گائے کا گوشت کھانے پر تشدد کا نشانہ بنايا گيا اور صرف يہي نہيں دوبارہ مارنے کي دھمکياں بھي ديں۔

مقبوضہ کشمير ايک بار پھر ہندو انتہا پسندي کا شکار، امن کي رام لي لا سجانےوالوں نے گاؤ ماتا کے نام پر تشدد کا کيا کھلا پرچار۔ دنيا کي سب سے بڑي سيکيولر ازم کا راگ الاپنے والي بھارت سرکار کا چہرہ ننگا ہوگيا۔

مقبوضہ کشمير کي کٹھ پتلي اسمبلي ميں مسلمان ايم ايل اے رشيد انجينئر کو بي جے پي کے انتہا پسند راوندر رائنا نے کھلے عام مارا پيٹا۔ کيونکہ انہوں نے گائے کے ذبيحہ اور اس کا گوشت کھانے کي پابندي کی بغاوت کی۔

رشيد انجينئر نے ايم ايل اے ہاسٹل ميں باربي کيو پارٹي دي تھي جس کے بعد انتہا ہندو رہنماؤں نے پہلے دھمکياں ديں اور پھر انکو تشدد کا نشانہ بنایا۔

کٹھ پتلي مقبوضہ کشمير اسمبلي کے مسلم ارکان کا کہنا ہے گائے جانور ہے اور اس کا گوشت حلال ہے۔ وہ مودي سرکار کي کسي پابندي کو نہيں مانتے۔ سماء

Indian occupied Kashmir Assembly

MLA

Engineer Rashid

BJP legislators

beef party

Jammu and Kashmir Assembly

Modi against slogans

ban on meal

Tabool ads will show in this div