بلوچستان میں بلدیاتی انتخابات: انتخابی مہم آج رات 12 بجے ختم ہوجائیگی

اسٹاف رپورٹ


کوئٹہ : بلوچستان میں بلدیاتی الیکشن کا میلہ 7 دسمبر کو سجنے جارہا ہے، انتخابی مہم آج رات 12 بجے ختم کردی جائے گی، اس سے پہلے الیکشن کی روایتی گہما گہمی تیز ہوگئی ہے، الیکشن کمیشن نے بھی پولنگ ڈے کی تیاریوں کو حتمی شکل دے دی ہے، تربت سے بلامقابلہ منتخب 2 کونسلر اغواء کرلئے گئے۔


الیکشن کمیشن نے پولنگ ڈے کی تمام تیاریاں مکمل کرلی ہیں، ضلع کونسل، یونین کونسل اور شہری وارڈز میں 18 ہزار امیدوار میدان میں اترے ہیں، جن کا انتخاب صوبے بھر سے 32 لاکھ ووٹرز کریں گے۔


انتخابی سامان بھی متعلقہ اضلاع میں پہنچادیا گیا ہے، صوبے میں 7 ہزار 190 نشستوں پر 2507 بلدیاتی امیدوار بلامقابلہ منتخب ہوچکے ہیں، 7 دسمبر کو  4168 نشتوں پر لگ بھگ 18 ہزار امیدواروں کا ٹاکرا ہوگا۔


ایف سی، پولیس اور اے ٹی ایف کے 50 ہزار سے زائد اہلکار انتخابی عمل کی نگرانی کریں گے، پاک فوج کے دستے بھی الرٹ رہیں گے، انتخابی مہم کا وقت آج رات 12 بجے ختم ہوجائے گا، جس سے پہلے امیدوار زور و شور سے ووٹروں کو لبھانے اور وعدے کرنے میں مصروف ہیں۔


چمن میں بلدیاتی انتخابات کی 42 نشستوں 3 وارڈز میں 3 کونسلرز کا بلا مقابلہ انتخاب ہوگیا، نصیر آباد میں ہے بھی ہر طرف بینروں اور پوسٹرز کی بھرمار ہے، کارنر میٹنگز کا سلسلہ بھی عروج پر ہے۔


خضدار میں صورتحال ہی عجیب ہے، باغبانہ اور پارکو یونین کونسلوں پر 447 امیدوار میدان میں اتر آئے لیکن ووٹر لسٹ میں کسی شخص کا نام ہی نہیں، امیدوار حیران ہیں کہ انہیں ووٹ دے گا کون؟۔


تربت کے علاقے دشت میں نیشنل پارٹی کے بلامقابلہ منتخب 2 کونسلرز کو اغواء کرلیا گیا، اس خبر کے بعد ضلع میں بلدیاتی انتخابات سے پہلے دیگر 3 بلامقابلہ منتخب کونسلرز نے استعفیٰ دے دیا۔ سماء

میں

آج

moon

arafat

بلوچستان

species

lost

online

Tabool ads will show in this div