پی ٹی آئی وزیراعظم ہاؤس کے سامنے احتجاج کرے تو ساتھ دینگے، وسیم اختر

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ


اسلام آباد : وسیم اختر کہتے ہیں کہ پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی میزائل حملوں کے خلاف وزیراعظم ہاؤس کے سامنے احتجاج کریں گے ان کا ساتھ دیں گے۔ اسد عمر نے کہا ہے کہ نیٹو سپلائی روکنے کیلئے پی ٹی آئی کے دھرنے پر اعتراضات کرنے والی وفاقی حکومت اور سیاسی جماعتیں بتادیں کہ میزائل حملے روکنے کا صحیح طریقہ کیا ہے؟۔ سراج الحق کا کہنا ہے کہ ہمارا دھرنا حکومت کے نہیں میزائل حملوں کے خلاف ہے۔


سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر کا کہنا ہے کہ میزائل حملوں کا معاملہ سب سے پہلے پارلیمنٹ میں ہی اٹھایا تھا، حکومت نے حمایت کے باوجود کچھ نہیں کیا، پورے ملک میں اتفاق رائے ہے کہ میزائل حملے غلط ہیں۔


ان کا کہنا ہے کہ نیٹو سپلائی روکنے کیلئے پی ٹی آئی کے دھرنے پر اعتراضات کرتے ہیں، وفاقی حکومت، سیاسی جماعتیں اور میڈیا بتادے کہ میزائل حملے روکنے کا صحیح طریقہ کیا ہے؟، میزائل حملے پاکستانی خود مختاری اور انسانی حقوق کے خلاف ہے۔


انہوں نے مزید کہا کہ ایم کیو ایم ہمیں دھرنے اور احتجاج نہ کرنے کا کہہ رہی ہے وہ خود احتجاج اور ہڑتالوں کی سیاست کرتی آئی ہے، دہشت گردی کے ہر واقعے کی مذمت کی، بم دھماکے بازاروں میں ہوں یا سیکیورٹی فورسز پر قابل مذمت ہیں۔


اسد عمر کا کہنا ہے کہ امریکا سے تعلقات ختم یا جنگ کرنے کا کوئی نہیں کہہ رہا، ڈالروں کیلئے اپنا نقطہ نظر تبدیل نہیں کریں گے۔


ایم کیو ایم کے رہنما وسیم اختر کا کہنا ہے کہ ہماری نظر میں احسن طریقہ یہ ہے کہ پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی بین الاقوامی عدالت اور اقوام متحدہ سے رابطہ کریں، وزیراعظم ہاؤس کے باہر احتجاج کیا جائے، پی ایم ہاؤس کے سامنے دھرنا دیا گیا تو ایم کیو ایم پی ٹی آئی کا ساتھ دے گی، میزائل حملوں کے خلاف ہیں۔


انہوں نے مزید کہا کہ نیٹو سپلائی بند کرنے کیلئے سڑکوں پر دھرنے دینا مسئلے کا حل نہیں، پی ٹی آئی کے دھرنے سے ٹرک ڈرائیوروں اور عام لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے، ماضی میں بھی نیٹو سپلائی روکی گئی اس سے فائدہ نہیں ہوا۔


متحدہ کے رہنما کہتے ہیں کہ ملک میں خود کش اور بم دھماکے کرنے والوں کو دہشت گرد قرار دینا ہوگا، دہشت گردوں کو شہید کہنے اور ان کی حمایت کرنے والوں پر پابندی لگانے کے الطاف حسین کے بیان پر قائم ہوں۔


وسیم اختر کا کہنا ہے کہ میزائل حملوں میں دہشت گرد مررہے ہیں، پاکستان سے غیر ملکی دہشت گردوں کو نکال دیں میزائل حملے بند ہوجائیں گے۔


جماعت اسلامی کے رہنما اور خیبرپختونخوا کے وزیر خزانہ سراج الحق کا کہنا ہے کہ وسیم اختر کی جانب سے وزیراعظم ہاؤس کے باہر احتجاج کی تجویز پر غور کریں گے، امریکا نے طورخم راستے سے سپلائی بند کردی ہے، حکومت فیصلہ کرے کہ امریکا سے میزائل حملے روکنے کی بات کرے گی یا نہیں۔


انہوں نے کہا کہ ہمارا دھرنا حکومت کے نہیں میزائل حملوں کے خلاف ہے، خیبرپختونخوا اسمبلی میں منظور کی گئی قرار داد کی ن لیگ سمیت تمام جماعتوں نے حمایت کی تھی، مسلح، سیاسی، معاشی، حکومتی و ریاستی ہر طرح کی دہشت گردی کے خلاف ہیں، شہادت کا فیصلہ نیت کی بنیاد پر کیا جاسکتا ہے، جنرل ثناء اللہ نیازی کو شہید سمجھتے ہیں۔ سماء

کے

آئی

پی

eid

updates

sargodha

killings

ٹی

nyt

Tabool ads will show in this div