کرپٹ کون ہے؟

DR ASIM REMAND 2100 PKG HASSAN ABBAS 27-08

کرپشن کا لفظ ہم میں سے ہر کسی نے سنا ہوگا ، پوری دنیا میں مختلف سیاسی جماعتیں اپنے مخالفین پر کرپشن کے الزامات لگاتی ہیں، پاکستان میں آج کل کرپشن کا خوب چرچہ ہے، کرپشن پاکستانی سیاستدانوں کے نزدیک کیا ہے؟ پاکستانی سیاستدانوں کے نزدیک جو مال ان کے پاس نہیں اور کسی اور کے پاس ہے وہ کرپشن اور حرام کا مال ہے، کرپشن کے الزامات لگانے والے اس طرح الزامات لگارہے ہوتے ہیں جیسے خود دودھ میں دھلے ہوئے ہیں، پاکستان میں جن لوگوں پر کرپشن کے الزامات لگتے ہیں وہ اپنے آپ کو مظلوم ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ان کیخلاف ہی کیوں کارروائی ہو رہی ہے؟، باقیوں کیخلاف کیوں نہیں ہوتی؟، گویا وہ تسلیم کررہے ہوتے ہیں کہ وہ کرپٹ ہیں لیکن ان کیخلاف کارروائی نہیں ہونی چاہئے۔

Zardari Gillani Ashraf

پاکستان میں ہر نئی آنیوالی حکومت کرپشن کا رونا روتی ہے اور اپنے سے پچھلی حکومت پر الزام لگاتی ہے کہ وہ بہت کرپٹ تھیں، ملک کا خزانہ خالی ہے، ادارے تباہ ہیں وغیرہ وغیرہ۔ نئی حکومت پچھلی حکومت کی کرپشن تو دیکھ لیتی ہے لیکن خود کیا کررہی ہے اس بارے میں نہیں سوچتی، نہ پچھلی حکومت کے کرپٹ لوگوں کیخلاف کارروائی کرتی ہے اور نہ ہی اپنے کرپٹ لوگوں کو کرپشن کرنے سے روک پاتی ہے۔

اس وقت کرپشن کے الزام میں مختلف رہنماؤں کو دھر لیا گیا ہے جو کہ نیب کی جانب سے اچھی کاوش ہے، پیپلز پارٹی کے ڈاکٹر عاصم حسین، قاسم ضیاء، یوسف رضا گیلانی، امین فہیم اور دیگر رہنماؤں کیخلاف کرپشن کی تحقیقات ہورہی ہیں، اوگرا کے سابق چیئرمین توقیر صادق کا کیس تو ہر کوئی جانتا ہے، ن لیگ کے پنجاب کے وزیر تعلیم کیخلاف بھی کرپشن کی تحقیقات کی خبریں گردش میں ہیں۔

Qasim Zia

لیکن مندرجہ بالا لوگوں میں سے ہر کوئی کہتا ہے کہ اس کے ساتھ زیادتی ہورہی ہے، کوئی کہتا ہے کہ کارروائی صرف اس ہی کیخلاف کیوں ہورہی ہے؟ اور کوئی کہتا ہے کہ اس سے سیاسی انتقام لیا جارہا ہے، پیپلز پارٹی کا تو ہمیشہ سے ہی مؤقف رہا ہے کہ اس کیخلاف سیاسی انتقامی کارروائیاں کی جارہی ہیں، جبکہ آصف زرداری کی کرپشن سے کون واقف نہیں، ان کی دولت سے سوئس اکاؤنٹ بھرا پڑا ہے، پہلے تو صدارتی استثنیٰ  کی آڑ میں بچے رہے لیکن اب وہ صدر نہیں ہیں، ان کیخلاف اب کارروائی کیوں نہیں ہورہی۔

1

کرپٹ لوگ ہر سیاسی پارٹی میں ہیں، چاہے تحریک انصاف ہی کیوں نہ ہو، جسٹس (ر) وجیہ الدین کی رپورٹ کو سامنے رکھ کر دیکھیں تو معلوم ہوگا کہ پی ٹی آئی کے اوپر جو لوگ ہیں وہ سب سے زیادہ کرپٹ ہیں۔ ن لیگ میں بھی کرپٹ افراد کی کمی نہیں، نیب کو چاہئے کہ ان کیخلاف بھی آزادانہ کارروائی کرے، کرپٹ لوگوں کو پکڑنا نیب کا کام ہے۔

اب سوال یہ ہے عوام کرپشن کو ختم کرنے میں اپنا کردار کیسے ادا کریں؟، کرپشن کے خاتمے کیلئے ضروری ہے کہ عوام ووٹ دیتے وقت ایسے افراد کا انتخاب کریں جو وطن عزیز پاکستان کے ساتھ مخلص ہوں اور جسے اپنی ذات کیلئے پیسہ بنانے کی لالچ نہ ہو، جس اُمیدوار کو منتخب کرکے عوام اسمبلی میں لانا چاہتے ہیں وہ امانت دار ہو، خدا کا خوف اس کے دل میں ہو۔

TauqeerSadiq

کرپشن کے خاتمے کیلئے ضروری ہے کہ ہر کوئی اپنی ذات سے احتساب شروع کرے، خود امانت دار بنے اور دوسروں کو بھی امانتداری کی تلقین کرے، پہلے اپنی ذات کو ٹھیک کرے اور پھر دوسروں کو ٹھیک کرنے کی کوشش کرے، کرپشن کے خاتمے کیلئے عدالتی نظام بھی مضبوط اور آزاد ہونا ضروری ہے، ایسا نہ ہو کہ کرپٹ لوگ گرفتار ہوں اور عدالتوں سے سزا پائے بغیر آزاد ہو جائیں۔

بہرحال ایک نکتے کی بات یہ ہے کہ ہر کوئی اپنے گریبان میں جھانکے اور دیکھے کہ وہ خود کتنا کرپٹ ہے، اپنی ذات کو اپنے اردگرد کے لوگوں کو کرپشن سے بچائے، مجموعی طور پر پر ایک دم کرپشن ختم نہیں ہوسکتی، فرداً فرداً ہی بدعنوانی کا خاتمہ ممکن ہے۔

افراد کے ہاتھوں میں ہے اقوام کی تقدیر

ہر فرد ہے ملت کے مقدر کا ستارہ ۔۔۔۔

PTI

Politics

ASIF ZARDARI

Tauqeer Sadiq

YOUSUF RAZA GILLANI

Raja Pervez Ashraf

Rana Mashhud

Tabool ads will show in this div