مطلب جسکی مددکریں وہ دکھائیں؟ تنقیدپرفیصل قریشی کاسوال

کہاں ہیں فہدمصطفیٰ،دانش تیمور اورفیصل قریشی

لاک ڈاؤن کی صورتحال میں نچلے طقے کے افراد سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں جن میں بیشتر روز کماتے اور روز کھاتے تھے، ایسے افراد تک راشن پہنچانے کیلئے حکومتی سطح کے علاوہ مختلف فلاحی تنظیموں اور عام افراد کی کاوشیں بھی سامنے آتی رہتی ہیں۔

ٹوئٹر صارفین نےایسی صورتحال میں ٹی وی پر گیم شو کے دوران کروڑوں کے انعامات تقسیم کرنے والے چینلز اور میزبانوں کو تنقید کا نشانہ بناڈالا۔ جس کے جواب میں اداکار فیصل قریشی نے دکھاوے کو ناپسندیدہ قرار دیتے ہوئے سب کیلئے خیر کی دعا مانگنے کی ہدایت کی۔

ایک صارف نے ٹویٹ کی جس میں سوال اٹھایا گیا تھا کہ" وہ ٹی وی چینلز کہاں ہیں جو اپنے شومیں 50 تولہ سونا، گاڑیاں، بائیکس اور نقد رقم مفت بانٹا کرتے تھے، آج عوام کو 2 روز کا راشن ہی دے دیں" ۔

گیم شو میں انعامات تقسیم کرنے کے رجحان کو فروغ دینے والے ٹی پروگرامز کی میزبانی کرنے والے تین اداکاروں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے صارف نے لکھا "فیصل قریشی، فہد مصطفیٰ اور دانش تیمور کہاں ہیں، آج کل نظر نہیں آ رہے" ۔

اس پر فیصل قریشی نے جواب میں لکھا " وہ اسپانسرزکا کمال تھا اورگیم شو تھا پر یہ بات واضح کردوں جو جو ہوسکتا ہے وہ کیا ہے اور کررہے ہیں، اس کا دکھاوا نہیں کیا ۔ سب کیلئے خیرمانگیں۔

اس ٹویٹ کے ردعمل میں عمران چٹھی نامی صارف نے کہا " دکھاوا نہ کریں ، لیکن اگرغریبوں کی مدد کی ہوتی تو نظر ضرور آتی۔ ہمارے ایکٹر سب ہائبرنیٹ ہو کر بیٹھ گئے ہیں، اللہ حساب لے گا تم لوگوں سے"۔

جواب میں فیصل قریشی نے پوچھا "کیسے نظرآتی بھائی؟ "۔

اس جواب سے بھی صارف کی تسلی نہ ہوئی تو انہوں نے لکھا "غصہ نہ کرو بھائی، سب پتہ چل جاتا ہے کون کیا کررہا ہے، کیا نہیں۔ آپ ہی کےدوست بھائی عامرلیاقت نےلوگوں کی مدد کی تو سب کو پتہ چلا۔ انہوں نے پولیس والوں کو بھی کھانا دیا لیکن ہمارے بیشتر اداکار لاک ڈاؤن سے لطف اندوز ہورہے ہیں"۔

اداکارنے اس ٹویٹ کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے پھر سوال اٹھایا " مطلب جس کی مدد کریں وہ دکھائیں"؟ ۔

واضح رہے کہ تقریبا 2 ہفتے قبل لاک ڈاؤن کے دوران عامرلیاقت نےکراچی میں پولیس، ٹریفک پولیس اوررینجرز اہلکاروں کے علاوہ مسافروں میں بھی اپنے ہاتھ سے پکی بریانی تقسیم کی تھی۔

عامرلیاقت کا کہنا تھا کہ ’’یہ کھانا میں نے خود بنایا ہے ،پولیس اوررینجرز اہلکاروں کو کھانا دے کر روحانی سکون ملا۔ یہ اپنی بھوک، پیاس اور گھروالوں کی یاد مٹا کرہمارے لیے کھڑے ہیں، یہ خیرات یا صدقہ نہیں ،محبت ہے ‘‘۔

Fahad Mustafa

danish taimoor

Tabool ads will show in this div