پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں ہفتےکےآخری دن تیزی

ہنڈریڈ انڈیکس میں 3.09 فیصد (842 پوائنٹس کا) اضافہ

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں ہفتے کے آخری دن کاروبار کا اختتام تمام انڈیکسز میں اضافے کے ساتھ ہوا۔ کے ای ایس 100 انڈیکس میں 3 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا اور انڈیکس 28 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کرگیا۔

مارکیٹ ماہرین کا اتفاق ہے کہ وفاقی مالیاتی پیکیج نے تاجروں کا اعتماد بحال کرنے میں اہم کردار ادا کیا، قرضو کی حدود اور شرائط میں نرمی کے ساتھ ساتھ کیپیٹل گین ٹیکس کے خاتمے نے بھی باہمی فنڈز کو پرکشش سرمایہ کاری کی ترغیب دی۔

ایلکسیئر سیکیورٹیز کے شیرون احمد نے جزوی طور پر بحالی کو کرونا کیسز پھیلنے کی رفتار مین کمی کو قرار دیا، تاہم ان کا کہنا ہے کہ اس تیزی کا ہر گز یہ مطلب نہیں کہ آئندہ دنوں میں بھی ایسا ہی ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ آج پوری طرح سے خریداری پر زور رہا، مارکیٹ اب بھی غیر مستحکم ہے اور ہر چیز کرونا وائرس سے پیدا شدہ صورتحال پر جڑی ہوئی ہے۔

اسٹاک مارکیٹ ماہر عدنان سمیع کا کہنا ہے کہ دنیا بھر کی مارکیٹوں میں تیزی کے رجحانات دیکھنے کو ملے ہیں، امریکا کی ڈاؤ اینڈ جونز میں حالیہ دنوں میں 20 فیصد تک اضافہ ہوا، یہی وجہ ہے کہ ہماری مارکیٹ میں بھی اضافہ ہوا۔

ٹاپ لائن سیکیورٹیز نے نوٹ کیا ہے کہ ہفتے کے آخری کاروباری سیشن میں خریداری کا رجحان رہا تاہم اس کا حجم کم تھا، تذبذب کے شکار خریدار کاروبار سے دور ہی رہے۔

جمعہ کے روز مجموعی طور پر 168 ملین کا کاروبار ہوا جس کی مالیت 4.2 ارب روپے تھی۔

جمعہ کو تیزی کے باوجود پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گزشتہ ہفتے مجموعی طور پر 8.3 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔ تجزیہ کاروں کے مطابق اس کی بنیادی وجہ لاک ڈاؤن کے باعث سرمایہ کاروں کی جانب سے فروخت کو ترجیح دینا تھا۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں جمعہ کو کاروباری ہفتے آخری دن 30 انڈیکس میں 3.3 اور آل شیئرز انڈیکس میں 2.2 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

PSX

Tabool ads will show in this div