زائدالمعیادگلوزکےحوالےسےچلنے والی خبرکی وضاحت

انکوائری کرائی گئی
Mar 15, 2020

صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹریٹ کے ترجمان نے میڈیا اور سوشل میڈیا پر شیخ زید اسپتال کوئٹہ میں زائد المعیاد گلوز کے حوالے سے چلنے والی خبر کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس معاملے کی اطلاع ملتے ہی فوری طور پرانکوائری کرائی گئی ہے۔

صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹریٹ کے ترجمان نے بتایا ہے کہ انکوائری سے پتہ چلا کہ 2012 میں ایک بین الااقوامی آرگنائزیشن نےاپنے کچھ اسٹورز ڈی جی ہیلتھ آفس کو دیے۔

ان اسٹورزمیں بین الااقوامی آرگنائزیشن کا کچھ پرانے گلوز کاایکسپائراسٹاک بھی پڑا ہواتھا جن کی تیاری کی تاریخ 2006 اور ایکسپائری کی تاریخ 2011 تھی۔

ڈی جی ہیلتھ آفس کے اس اسٹور سے کرونا وائرس کا سامان مزدور ٹرک پر لوڈ کررہے تھے تو ساتھ ہی مزدوروں نے ایکسپائر گلوز چند ڈبوں کو بھی لوڈ کردیا۔

اس کی اطلاع صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹریٹ کو موصول ہوتے ہیں ان ایکسپائرز گلوز کو واپس منگوا کر ان کی جگہ نئے گلوز بجھوادیے گئے۔

مزید براہ ویڈیو کلپ میں جو گلوز دکھائےگئے ہے ان کی خریداری صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹریٹ نے کبھی بھی نہیں کی۔

اس کے علاوہ ماسک پر ایکسپائری کی تاریخ درج نہیں ہوتی اور ماسک کو اس وقت تک استعمال کیا جاسکتا ہے جب تک وہ آلودہ نہ ہوجائے۔

gloves

Tabool ads will show in this div