جوفرض یاواجب نہیں انہیں وباء سے بچاؤکیلئے چھوڑنےمیں حرج نہیں

ائمہ حضرات نمازوں میں اختصار سے کام لیں
Mar 14, 2020
[video controls src="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/03/Mufti-Taqi-Usmani-Sot-NEW-13-03.jpg.mp4"][/video]

ممتاز عالم دين مفتی تقی عثمانی نے کرونا وائرس سے بچاؤ کيلئے احتياطی تدابير کو اسلام کے عين مطابق قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسے معاملات جو کہ فرض یا واجب نہیں ہے انہیں وباء کے سلسلے میں چھوڑنے میں شرعی طور پر کوئی مضائقہ نہیں۔ 

اپنے ویڈیو پیغام میں مفتی تقی عثمانی کا کہنا تھا کہ وباء زیادہ پھیل جانے کی صورت میں ہاتھ ملانے سے گبھی پرہیز کیا جائے نہیں، تاہم پابندی لگا دینا بہتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ نماز جمعہ و دیگر نمازوں کا دورانیہ اور مسجد میں قیام مختصر کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جمعے کے اجتماعات میں بھی یہ خیال رکھا جائے کہ سنتیں گھر سے پڑھ کر آئیں، وضو بھی    گھر سے کرکے آئیں اور ائمہ حضرات بھی نمازوں میں اختصار سے کام لیں۔ ان کا کہنا تھا کہ شادی بیاہ کے موقع پر سادگی اختیار کریں کیوں کہ ویسے بھی یہ سنت کے مطابق ہے۔ 

مفتی تقی عثمانی نے کہا کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے خود بھی احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا حکم دیا ہے جبکہ ایک حدیث میں طاعون کے متعلق فرمایا تھا کہ جب کسی جگہ طاعون پھیلے تو باہر کے لوگ اندر نہ جائیں اور اندر کے لوگ باہر نہ جائیں۔

MUFTI TAQI USMANI

Tabool ads will show in this div